آئی سی سی ایونٹس کا مستقبل کیا ہو گا، ٹی 20 ورلڈکپ ملتوی ہو گا یا نہیں، ٹیسٹ چیمپین شپ کا کیا بنے گا؟ خبر آ گئی

آئی سی سی ایونٹس کا مستقبل کیا ہو گا، ٹی 20 ورلڈکپ ملتوی ہو گا یا نہیں، ٹیسٹ چیمپین شپ کا کیا بنے گا؟ خبر آ گئی


آئی سی سی ایونٹس کا مستقبل کیا ہو گا، ٹی 20 ورلڈکپ ملتوی ہو گا یا نہیں، ٹیسٹ …

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) چین سے پوری دنیا میں پھیلنے والے کورونا وائرس کے باعث انٹرنیشنل کرکٹ کونسل (آئی سی سی) ایونٹس کے مستقبل کا فیصلہ کرنے کیلئے 21 اپریل کو ویڈیو کانفرنس میں مختلف امکانات اور تجاویز پر غور کیا جائے جبکہ اس دوران ٹی 20 ورلڈکپ اور ٹیسٹ چیمپین شپ کا معاملے پر بھی بات چیت ہو گی۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کے چیف ایگزیکٹو آفیسر (سی ای او) وسیم خان کا کہنا ہے کہ اس موقع پر ورلڈ ٹی 20اور ٹیسٹ چیمپین شپ سمیت مختلف مقابلوں کے متبادل پلان زیر بحث آئیں گے، ہر ملک کے الگ چیلنجز مگر مسائل اور مفادات یکساں ہیں،ان کے مطابق بھارت سے سیریز کے امکانات نہ ہونے کی وجہ سے پاکستان کو نقصان کی تلافی کیلئے کسی میگا ایونٹ کی میزبانی ملنا چاہیے۔

وسیم خان نے کہا کہ انٹرنیشنل کرکٹ کیلئے ہمارا کیس مزید مضبوط ہوگیا اور ہم 2023میں کوئی بھی آئی سی سی ٹورنامنٹ کرانے کیلئے تیار ہیں،ملتان سلطانز تو چاہیں گے لیکن کوئی مذاق نہیں کہ ان کو ٹرافی سونپ دی جائے، پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) کے چیمپین کا فیصلہ میدان میں ہی ہونا چاہئے ورنہ لطف نہیں آئے گا، رواں سال کے آخر میں کوئی ونڈو تلاش کرنے کی کوشش کررہے ہیں جبکہ لیگ میں نئی ٹیمیں شامل کرنے کا فیصلہ 2022میں کریں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ میں ہیڈ کوچ و چیف سلیکٹر مصباح الحق کی بات سے اتفاق کرتا ہوں کہ ٹیسٹ چیمپین شپ کو ری شیڈول کرتے ہوئے سب کو برابر کے مواقع ملنا چاہئیں، پی ایس ایل میں شین واٹسن، جیسن رائے سمیت دنیا کے سٹار کرکٹرز نے شرکت کرتے ہوئے انتظامات پر اطمینان کا اظہار کیا، ملک میں ایک عرصے بعد پہلا بڑا ایونٹ ہونے کے باوجود سیکیورٹی اور لاجسٹک کے کوئی مسائل سامنے نہیں آئے لیکن بدقسمتی سے پی ایس ایل مکمل نہیں کرسکے البتہ ایونٹ کامیاب رہا اور شائقین کے جوش و خروش نے اس کی خوبصورتی میں اضافہ کیا۔

انہوں نے کہا کہ بھارت سے سیریز کے امکانات نہ ہونے کی وجہ سے پاکستان کو نقصان کی تلافی کیلئے کسی میگا ایونٹ کی میزبانی ملنی چاہئے اور ہم بھی 2023ءمیں کوئی آئی سی سی ٹورنامنٹ کرانے کیلئے تیار ہیں، اس میں کوئی شک نہیں کہ ہم ٹیسٹ کرکٹ زیادہ کھیلنا چاہتے ہیں لیکن مالی استحکام کیلئے پیسہ بھی چاہیے۔اس لئے نظرثانی شدہ انٹرنیشنل شیڈول میں ہماری ان ضروریات کو بھی پیش نظر رکھتے ہوئے توازن برقرار رکھنا بہتر ہو گا۔

مزید : کھیل



جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے