امریکامیں صرف ایک ہفتے میں کتنے لاکھ لوگ بے روزگارہوئے؟ ایسے اعدادوشمار آگئے کہ یقین کرنا مشکل

امریکامیں صرف ایک ہفتے میں کتنے لاکھ لوگ بے روزگارہوئے؟ ایسے اعدادوشمار آگئے کہ یقین کرنا مشکل


امریکامیں صرف ایک ہفتے میں کتنے لاکھ لوگ بے روزگارہوئے؟ ایسے اعدادوشمار …

واشنگٹن(ڈیلی پاکستان آن لائن)چین اور یورپ کے بعد اس وقت امریکا کورونا وائرس کا نیا مرکز بن چکا ہے۔ جہاں ہزاروں جانیں ضائع ہوئی ہیں وہیں اس موذی وائرس نے امریکی معیشت کو ہلا کر رکھ دیا ہے۔ لاکھوں انسان بے روزگار ہوچکے ہیں۔

برطانوی خبرایجنسی رائٹرز کے مطابق امریکا بھر میں گزشتہ تین ہفتوں میں ایک کروڑ اڑسٹھ لاکھ لوگوں نے بے روزگاروں کو ملنے والی امداد کے فارم بھر کر حکومت کو جمع کروائے ہیں۔ لیکن ابھی جو ہفتہ گزرا ہے اس میں چھ ملین یعنی ساٹھ لوگ بے روزگار ہوئے ہیں۔

رپورٹ کے مطابق ماہرین خدشہ ظاہر کرچکے ہیں کہ معیشت کی صورتحال میں مزید بگاڑپیدا ہوگا اور اپریل میں دوکروڑ لوگ اپنی نوکریاں کھو سکتے ہیں، حکومت و چاہئے کہ وہ لوگوں کی مدد کیلئے مزید اقدامات کرے تاکہ صورتحال کو فری فال سے بچایا جاسکے۔

ہوٹلز، بارز، کاروبار، فیکٹریاں اور دیگر سوشل مقامات بند ہونے سے امریکا میں ریکارڈ بے روزگاری پھیلی ہے۔ حکومت کے مطابق ابتدائی ہفتے میں دو لاکھ اکسٹھ ہزار لوگ بے روگار ہوئے تھے تاہم چار اپریل کو جو ہفتہ ختم ہوا اس وقت تک بے روزگار افراد کی تعداد ساٹھ لاکھ سے بڑھ چکی تھی اس طرح اکیس مارچ سے اب تک کل ایک کروڑ اڑسٹھ لاکھ لوگ بے روزگار ہوچکے ہیں۔

رپورٹ کے مطابق وفاقی حکومت نے لوگوں کی مالی مدد کیلئے دو اعشاریہ تین ٹریلین ڈالرز کا پیکج اعلان کررکھا ہے تاہم یہ رقم لوگوں کی امداد کیلئے ناکافی ہے۔

خیال رہے دنیا میں کورونا وائرس کے مصدقہ متاثرین کی 16 لاکھ سے تجاوز کر گئی ہے جبکہ اب تک اس سے 95 ہزار سے زائد افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔ 

 اس وقت دنیا بھر میں سب سے زیادہ کیسز امریکا میں ہیں۔

مزید : بین الاقوامی /کورونا وائرس



جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے