ایران کا امریکہ پر ایران مخالف پابندیاں ہٹانےکےعالمی مطالبے نظر انداز کرنے کا الزام

ایران کا امریکہ پر ایران مخالف پابندیاں ہٹانےکےعالمی مطالبے نظر انداز کرنے کا الزام


ایران کا امریکہ پر ایران مخالف پابندیاں ہٹانےکےعالمی مطالبے نظر انداز کرنے …

تہران(ڈیلی پاکستان آن لائن)بیلجیم میں ایران کے سفیر نے امریکی انتظامیہ پر الزام لگایا ہے کہ وہ ایران پر سے پابندیاں ہٹانے کے عالمی مطالبے نظر انداز کر رہا ہے جبکہ ملک کو نوول کروناوائرس کے پھیلا کیخلاف جنگ کے چیلنج کا سامنا ہے ۔

ایران کے سرکاری ٹی وی کے مطابق بیلجیم میں ایرانی  مندوب غلام حسین دہقانی نے کہا کہ نوول کروناوائرس کے پھیلاؤ کے اثرات کے دوران زیادہ سے زیادہ پابندیوں کے ذریعے واشنگٹن چاہتا ہےکہ ایران امریکی مطالبات کے سامنے ہتھیار ڈال دے۔انہوں نے نوول کروناوائرس سے متاثرہ ممالک کے خلاف پابندیوں کے خاتمہ کےلئے اقوام متحدہ سمیت بین الاقوامی مطالبوں کا حوالہ دیا۔دہقانی نے کہا کہ نوول کروناوائرس کوئی قومی مسئلہ نہیں ہے،یہ کسی مخصوص جغرافیہ ، علاقہ ، قومی یا ثقافت تک ہی محدود نہیں،اس نے عالمی یکجہتی کا ایک اہم موقع فراہم کیا ہے۔ایرانی سفارتکار نے کہا کہ ایران امریکی کی یکطرفہ پابندیوں کو "غیر قانونی اور بین الاقوامی قانون کی خلاف ورزی” سمجھتا ہے اور ان کے سامنے ہتھیار نہیں ڈالے گا۔

ایرانی صدر حسن روحانی نے گذشتہ دنوں کہا تھا کہ ایران نے ممالک پر زور دیا ہے کہ وہ ایران کے خلاف "ظالمانہ اور یکطرفہ” پابندیوں کو ختم کرنے کےلئے امریکہ پر دبا ڈالیں کیونکہ ایران اس بیماری پر قابو پانے کے لئے جدوجہد کر رہا ہے۔روحانی نے کہا تھا کہ امریکی پابندیوں کے ہوتے ہوئے ایران کے لئے نوول کروناوائرس کا مقابلہ کرنا دوسرے ممالک کی نسبت زیادہ مشکل ہے،ایران 68 ہزار 192 تصدیق شدہ مریضوں اور 4 ہزار 232 اموات کے ساتھ عالمی وبا سے مشرق وسطی میں سب سے زیادہ متاثرہ ملک ہے۔

مزید : بین الاقوامی



جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے