بالوں کی جوﺅں کے لیے دی جانے والی دوا کے ذریعے کورونا وائرس کا علاج، تازہ تحقیق میں حیران کن انکشاف سامنے آگیا

بالوں کی جوﺅں کے لیے دی جانے والی دوا کے ذریعے کورونا وائرس کا علاج، تازہ تحقیق میں حیران کن انکشاف سامنے آگیا


بالوں کی جوﺅں کے لیے دی جانے والی دوا کے ذریعے کورونا وائرس کا علاج، تازہ …

کنبرا(مانیٹرنگ ڈیسک) دنیا بھر کے سائنسدان کورونا وائرس کی دوا تلاش کرنے میں جتے ہوئے ہیں اور اب ان کوششوں میں آسٹریلیا سے ایک خوشخبری آ گئی ہے۔ میل آن لائن کے مطابق آسٹریلوی سائنسدانوں نے سر کی جوﺅں کا خاتمہ کرنے اور پیراسائٹک انفیکشنز کے لیے استعمال ہونے والی ایک دوا کا کورونا وائرس پر تجربہ کیا ہے جس کے 100فیصد نتائج سامنے آئے ہیں۔ سائنسدانوں نے کورونا وائرس سے متاثرہ خلیوں پر اس دوا کا تجربہ کیا، جس میں صرف 48گھنٹے بعد ان خلیوں میں کورونا وائرس کا لیول حیران کن طور پر99.8فیصد کم ہو گیا اور 72گھنٹے بعد بالکل ختم ہو گیا۔

اس کامیابی کے بعد آسٹریلوی سائنسدانوں نے مطالبہ کیا ہے کہ اس دوا کے فوری طور پر کورونا وائرس کے مریضوں پر ٹرائیل شروع کیے جائیں۔ رپورٹ کے مطابق یہ دوا ’Ivermectin‘ ہے ، جسے سٹرومیکٹول (Stromectol)بھی کہا جاتا ہے۔ یہ امریکہ اور برطانیہ سمیت دنیا بھر میں سر کی جوﺅں اور پیراسائٹس سے ہونے والی انفیکشنز کے انسداد کے لیے استعمال ہوتی ہے۔ یہ دوا 1970ءکی دہائی میں تیار کی گئی تھی۔اس آسٹریلوی تحقیق کے نتائج کی برطانوی ماہرین نے بھی توثیق کی ہے اور کہا ہے کہ اس کے کورونا وائرس کے مریضوں پر تجربات جلد شروع کیے جانے چاہئیں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس



جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے