بھارتی حکومت نے اپنے سرکاری افسران کو ویڈیو کانفرنس کے لیے سب سے معروف ایپ استعمال کرنے سے روک دیا پاکستان میں بھی میٹنگز میں یہی ایپ استعمال ہورہی ہے

بھارتی حکومت نے اپنے سرکاری افسران کو ویڈیو کانفرنس کے لیے سب سے معروف ایپ استعمال کرنے سے روک دیا پاکستان میں بھی میٹنگز میں یہی ایپ استعمال ہورہی ہے


بھارتی حکومت نے اپنے سرکاری افسران کو ویڈیو کانفرنس کے لیے سب سے معروف ایپ …

  

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) بھارتی حکومت نے اپنے سرکاری افسران کو ویڈیو کانفرنس کے لیے معروف ایپلی کیشن ’زوم‘ استعمال کرنے سے روک دیا ہے۔ میل آن لائن کے مطابق بھارت کی سائبر سکیورٹی ایجنسی نے حکومت کو متنبہ کیا ہے کہ یہ ایپلی کیشن محفوظ نہیں ہے اور اس پر ہونے والی گفتگو ہیکنگ کے ذریعے سنی اور ریکارڈ کی جا سکتی ہے۔ جس کے بعد حکومت نے تمام سرکاری عمال کو اس ایپ کے استعمال سے روک دیا۔

رپورٹ کے مطابق بھارتی ایجنسی’سائبر کوارڈی نیشن سنٹر‘ کی طرف سے بتایا گیا ہے کہ ’زوم‘ میں سکیورٹی کے حوالے سے انتہائی سنگین نوعیت کی خامیاں موجود ہیں اور اسے باآسانی ہیک کیا جا سکتا ہے۔ ٹیک کرنچ نامی ویب سائٹ نے اپنی رپورٹ میں بتایا ہے کہ امریکہ اور پاکستان سمیت متعدد ممالک اسی ایپلی کیشن کو ویڈیو کانفرنس کے لیے استعمال کر رہے ہیں اور کورونا وائرس کی وجہ سے لاک ڈاﺅن کے دوران حکومتی امور میں اس ایپ پر انحصار بہت زیادہ بڑھ چکا ہے، جس کا اندازہ اس بات سے لگایا جا سکتا ہے کہ بھارت میں گزشتہ دو ہفتوں سے یہ ایپلی کیشن روزانہ ساڑھے چار لاکھ بار ڈاﺅن لوڈ کی جا رہی ہے۔

مزید :

بین الاقوامی



جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے