بھارت کے اراکین اسمبلی نے مثال قائم کردی، کورونا ریلیف فنڈ کیلئے وہ کردکھایا جس کا پاکستان کو ابھی تک انتظار ہے

بھارت کے اراکین اسمبلی نے مثال قائم کردی، کورونا ریلیف فنڈ کیلئے وہ کردکھایا جس کا پاکستان کو ابھی تک انتظار ہے


بھارت کے اراکین اسمبلی نے مثال قائم کردی، کورونا ریلیف فنڈ کیلئے وہ کردکھایا …

نئی دلی (ڈیلی پاکستان آن لائن) بھارتی حکومت کی جانب سے کورونا بحران کے پیش نظر ارکان پارلیمنٹ کی تنخواہوں میں ایک سال کیلئے 30 فیصد کمی کردی گئی ہے جبکہ ترقیاتی فنڈز پر 2 سال کی پابندی عائد کردی گئی ہے۔

بھارتی میڈیا کے مطابق بھارت کی وفاقی کابینہ نے فیصلہ کیا ہے کہ کورونا بحران سے نمٹنے کیلئے اراکین اسمبلی کی تنخواہوں میں 30 فیصد کٹوتی کی جائے گی۔ اس سلسلے میں خصوصی آرڈیننس جاری کردیا گیا ہے۔ مودی کابینہ نے یہ بھی فیصلہ کیا ہے کہ 2 سال کیلئے ممبرز آف پارلیمنٹ لوکل ایریا ڈویلپمنٹ سکیم کے فنڈز روک دیے جائیں گے۔  اس فنڈ کے 7900 کروڑ روپے ریلیف فنڈ میں دیے جائیں گے۔

بھارت کے وزیر برائے ماحولیات و اطلاعت پرکاش جاویدکر کے مطابق صدر ، نائب صدر، ریاستوں کے گورنرز نے بھی اپنی تنخواہوں میں رضاکارانہ کٹوتی قبول کی ہے، یہ سارے پیسے بھی ریلیف فنڈ میں جائیں گے۔

مزید : بین الاقوامی /کورونا وائرس



جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے