حکومت سنجیدگی کا مظاہرہ کرتےہوئےاپنی اَناکےخول سےباہر آئے،متکبرانہ رویےکانقصان۔۔۔سراج الحق نے حیران کن بات کہہ دی

حکومت سنجیدگی کا مظاہرہ کرتےہوئےاپنی اَناکےخول سےباہر آئے،متکبرانہ رویےکانقصان۔۔۔سراج الحق نے حیران کن بات کہہ دی


حکومت سنجیدگی کا مظاہرہ کرتےہوئےاپنی اَناکےخول سےباہر آئے،متکبرانہ …

وہاڑی(ڈیلی پاکستان آن لائن)امیرجماعت اسلامی پاکستان سینیٹرسراج الحق نےکہا کہ حکومت مشکل وقت میں سنجیدگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے اپنی اَنا کے خول سے باہر آئے،وزیر اعظم عمران خان کو خود تمام سیاسی راہنماؤں سے رابطہ کرنا چاہئے،حکومت کے متکبرانہ رویے کا نقصان عوام کو بھگتنا پڑرہا ہے ،احساس پروگرام کے تحت لوگوں میں رقوم کی تقسیم کے حوالے سے انتظامات ناکافی ہیں،جگہ جگہ بھگدڑ مچنے اور دھکم پیل سے لوگوں کےکچلےجانےکےواقعات سامنے آچکے ہیں،وزیر اعظم نے کہاکہ کورونا وبا میں اضافہ ہوگا جو ہمارے لئے لمحہ فکریہ ہے،حکومت نے ایک دن ڈاکٹر کو سلام پیش کیا تو اگلے دن انہی ڈاکٹرز پر ڈنڈے بھی برسائے جو قابل افسوس ہے،ڈاکٹرز جن چیزوں کا مطالبہ کررہے ہیں وہ آسانی سے مہیا کی جاسکتی ہیں، امدادی رقم کی تقسیم کا جو طریقہ حکومت کی طرف سے اپنایا گیا وہ درست نہیں،امدادی رقم کی تقسیم کےلئے کورونا سے بچاؤ کی حفاظتی تدابیر کو نظر انداز کیاجارہاہے،عوام سے اپیل ہے کہ اس مشکل گھڑی میں ایک قوم ہونے کا ثبوت دیاجائے اور مستحق افراد کی ” اپنی مدد آپ” کے تحت مدد کی جائے ۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے وہاڑی سنٹرل جیل کے دورہ کے موقع پر میڈیاکے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ سینیٹر سراج الحق نے جیل کے عملہ اور قیدیوں میں سینی ٹائزر،صابن، حفاظتی کٹس سمیت دیگر حفاظتی سامان تقسیم کیا اور جیل میس کا بھی دورہ کیا۔سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ خدانخواستہ کورونا کی وباءبڑے پیمانے پر پھیلی تو ہمارے ملک میں صحت کی اتنی سہولیات نہیں کہ ہم کنٹرول کرسکیں،الخدمت فاؤنڈیشن کے رضاکار جیلوں اور پولیس سٹیشنز میں جاکر حفاظتی سپرے کررہے ہیں،جماعت اسلامی 63کروڑ روپے سے زائد مالیت کا راشن 33لاکھ مستحق فراد میں تقسیم کرچکی ہے، الخدمت خواتین رضاکار بھی بیوہ خواتین اور یتیم بچوں میں کروڑوںروپے کی امداد پہنچاچکی ہیں،جماعت اسلامی نے کورونا وائرس کے باعث اپنی تمام تر سرگرمیوں کوختم کرتے ہوئے ملک بھر کے دفاتر کو کورونا وائرس کی آگاہی اور مستحقین کی امدادکےلئے وقف کردیا ہے۔

انہوں نے حکومت کو مشورہ دیا کہ کورونا وائرس سے بچاؤ کےلئے تمام اپوزیشن جماعتوں سے ملکر نیشنل ایکشن پلان بنایاجائے، ہمارا مستحق افراد کی مدد کرنے کا طریقہ حکومت سے مختلف ہے،ہمارے رضاکاروں پر جس طرح قوم نے اعتماد کیا ہے ہم اس اعتماد کو ٹھیس نہیں پہنچنے دیں گے،ڈاکٹرز کمیونٹی کے ساتھ ساتھ میڈیا ورکرز بھی فرنٹ لائن پر رہتے ہوئے کورونا سے جنگ لڑرہے ہیں جو قابل تعریف ہے، کورونا وائرس کو شکست دینے کےلئے پوری قوم تعاون کررہی ہے لیکن حکومت سنجیدہ نہیں ہے،ملک میں کورونا وائرس پھیلنے کی شرح بہت زیادہ اور خطرناک ہے حکومت فوری طور پر صحت ایمرجنسی نافذ کرے،کورونا سے بچاؤ کے لئے سب سے زیادہ آگاہی مہم دینی مدارس اور مساجد نے چلائی ہے اور کسی دینی جماعت کو ٹارگٹ نہیں کرنا چاہئے ۔انہوں نے کہا کہ ملک کی تمام جیلوں میں گنجائش سے زیادہ قیدی بند ہیں ،قیدیوں کو بنیادی انسانی حقوق سے بھی محرورم رکھا جارہا ہے ،اگر خدانخواستہ جیلوں میں وباپھیل گئی تو اس پر قابو پانامشکل ہوجائے گا

مزید : اہم خبریں /کورونا وائرس



جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے