حکومت نے رمضان المبارک میں باجماعت تراویح کی مشروط اجازت دیدی

mobile logo


حکومت نے رمضان المبارک میں باجماعت تراویح کی مشروط اجازت دیدی

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)حکومت نے رمضان المبارک میں باجماعت تراویح کی مشروط اجازت دیدی. صدرپاکستان  عارف علوی کی زیرصدارت  علماء ومشائخ کا مشاورتی اجلاس اسلام آباد میں ہوا۔اجلاس میں کورونا وائرس کی روک تھام کے حوالے سے رمضان المبارک میں باجماعت نماز اور نماز تراویح کیلئے حکمت عملی وضع کرنے پر غور کیاگیا ۔تمام صوبوں سے علمائے کرام نے ویڈیو لنک کے ذریعے اجلاس میں شرکت کی  اجلاس میں نماز تراویح کی مشروط اجازت دے دی گئی ہے۔

 نجی ٹی وی دنیا نیوز کے مطابق اجلاس کے بعد گفتگو کرتے ہوئے صدر نے ہدایات کیں کہ مساجداورامام بارگاہوں میں دریاں یاقالین نہیں بچھائےجائیں گے۔ صاف فرش پرنمازپڑھی جائےگی،صدرمملکت عارف علوی نے کہا سڑکوں،فٹ پاتھوں پرنمازتراویح پڑھنےسےاجتناب کریں صرف مساجد کے احاطے میں نمازتراویح کااہتمام کیاجائے ۔نمازسےپہلےاوربعدمیں مجمع لگانےسےگریزکیاجائےگا۔

صدر نےکہا صف بندی کےدوران نمازیوں میں 6 فٹ کافاصلہ کیاجائے،مسجدمیں نماز کیلئےکھڑےہونےکیلئےنشان لگالیاجائے۔ 

صدر نے کہانماز ی ماسک اوردستانےپہن کرآئیں،کسی کےساتھ بغل گیرہوں اورنہ  ہی مصافحہ کریں۔ وضوگھر سےہی کرکےمسجدمیں جایاجائے۔

صدرعارف علوی نے مزید کہا کہ مسجد کےفرش کوصاف کرنےکیلئےکلورین کےمحلول سےدھویاجائے،مسجدمیں چٹائی پربھی کلورین کےمحلول کاچھڑکاؤکیاجائے، صف میں 2 نمازیوں کی جگہ خالی چھوڑی جائے۔انہوں نے کہا  مسجد،امام بارگاہ کی انتظامیہ ضلعی حکومت سےرابطہ رکھے، مساجد،امام بارگاہوں میں احتیاطی تدابیرکےساتھ تراویح کرائیں۔ 

خیال رہے پاکستان میں کورونا وائرس کے کیسز میں مزید اضافہ ہو گیاہے۔پاکستان میں چند دنوں کے اندر حکومتی کوششوں کے باعث کورونا ٹیسٹوں کی استعداد میں اضافہ کیا گیاہے جوکہ اب تقریبا دگنی ہو گئی ہے تاہم اس میں مسلسل اضافہ جاری ہے۔

گزشتہ چوگیس گھنٹوں کے دوران پاکستان میں تقریبا 6 ہزار چار سو سولہ ٹیسٹ کیے گئے ہیں جن میں مزید 465 افراد میں وائرس کی تشخیص ہوئی ہے جس کے بعد تعداد 7 ہزار چار سو اکیاسی ہو گئی ہے، پانچ ہزار پانچ سو چھ مریض ہیں، ایک ہزار آٹھ سو بتیس افراد کورونا کو شکست دینے میں کامیاب ہوچکے جبکہ 143 افراد جان کی بازی ہار چکے ہیں ، گزشتہ چوبیس گھنٹوں میں آٹھ افراد جاں بحق اور مزید 465کیسز سامنے آئے ۔ 

مزید :

اہم خبریںقومی



جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے