خیبر پختونخوا حکومت نے صوبے میں 21لاکھ خاندانوں کیلئےکتنے ارب کا پیکج منظور کر لیا ؟تفصیلات آ گئیں

خیبر پختونخوا حکومت نے صوبے میں 21لاکھ خاندانوں کیلئےکتنے ارب کا پیکج منظور کر لیا ؟تفصیلات آ گئیں


خیبر پختونخوا حکومت نے صوبے میں 21لاکھ خاندانوں کیلئےکتنے ارب کا پیکج منظور …

بنوں (ڈیلی پاکستان آنلائن)وزیر اعلی خیبر پختونخوا محمود خان نے کہا ہے کہ کورونا وائرس اللہ تعالی کی طرف سے ایک امتحان ہے، اس وقت پوری دنیا اس وائرس کی زد میں آچکی ہے،صوبائی حکومت وائرس سے نمٹنے کیلئے تمام تر وسائل بروئے کار لا رہی ہے ،جزوی لاک ڈاون کے باعث دیہاڑی دارطبقہ متاثر ہوا لیکن حکومت عوام کے ساتھ کھڑی ہے، خیبر پختونخوا میں 21لاکھ خاندانوں کیلئے 32ارب روپے کا پیکج منظورکیا ہے، احساس پروگرام کے تحت ان خاندانوں کی رجسٹریشن کا عمل جاری ہے، ہم لوگوں کو بے روز گار نہیں کرنا چاہتے، اس لئے مکمل کرفیو نہیں لگا یا، لا ک ڈاؤن کا مقصد لوگوں کو بے روز گار کرنا نہیں بلکہ  صحت مند معاشرے کا سوال ہے ،لاک ڈاؤن کو کامیاب کرانے کیلئے عوام سے تعاون کی اپیل کرتا ہوں، عو ام ختیاطی تدابیر خصوصا سوشل ڈیسٹینس پر عمل کریں، حکومت دکھ کی اس گھڑی میں عوام کے ساتھ کھڑی ہے، حکومت جو کر سکتی تھی ہم نے کیا ہے، خیبر پختونخوا حکومت نے 32 ارب روپے کا پیکج دیا ہے، کمی ضرور ہے لیکن میں مطمئن ہوں،طبی آلات کی کمی دور کرنے کی کوشش کر رہے ہیں ۔

 بنوں یونیورسٹی میں قائم قرنطینہ سنٹر کے دورے کے موقع پر گفتگو کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا  محمود خان نے کہا کہ بنوں کے حوالے سے کچھ عناصر بے بنیاد پروپیگنڈا کر رہے تھے کہ پورے صوبے سے یہاں کورونا کے مریض لائیں گے لیکن ایسا ہر گز نہیں،یہاں صرف بنوں سے تعلق رکھنے والے مریضوں کا علاج معالجہ ہو گا ،تبلیغی جماعت کے دوستوں کو سہولیات مہیا کریں گے،یہ ہمارے بھائی اور مہمان ہیں ،اس طرح کے حالات میں چیزیں بھی مہنگی ہو جاتی ہیں لیکن ہم نے یہ کنٹرول کرنا ہے ۔انہوں نے کہا کہ خیبر پختونخوا میں 21 لاکھ خاندانوں کو  احساس پروگرام کے تحت پیسے دے رہے ہیں، منافع خوری اور ذخیرہ اندوزی کیخلاف اب تک چار سو انسپکیشن کی جاچکی ہیں تاکہ عوام کو اشیائے ضروریہ کی فراہمی میں دشواری نہ ہوں۔

قبل ازیں کمشنر عادل صدیق نے وزیر اعلیٰ محمود خان کو قرنطینہ سنٹر اور مہیا کی جانی والی سہولیات بارے بریفنگ دی ۔کمشنر عادل صدیق کا کہنا تھا کہ پورے ڈویژن میں انیس جبکہ ضلع بنوں میں سات کرونا مریض ہیں ،بنوں میں سترہ سو سے زائد افراد کو قرنطینہ میں رکھا جاسکتا ہے، پورے ڈویژن میں تین آئسولیشن سنٹرز ہیں،باہر ممالک سے آئے ہوئے گیارہ سو افراد کو ٹریس کیا گیا ہے، ڈویژن میں چونتیس کیس مشتبیہ تھے، جن کے تمام کے ٹیسٹ کئے گئے ہیں، جہاں جہاں کرونا مریض ہیں آس پاس کے علاقوں کو کورنٹائن کیا گیا ہے، ڈس انفیکشن سپرے بھی باقاعدگی سے جاری ہے۔

مزید : علاقائی /خیبرپختون خواہ /بنوں /کورونا وائرس



جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے