”روی شاستری چھپ رہے تھے، ہم نے انہیں ڈھونڈا اور اٹھا کر سوئمنگ پول میں پھینک دیا اور پھر۔۔۔“ جاوید میانداد نے بنگلور میں پیش آنے والا دلچسپ واقعہ سنا دیا

”روی شاستری چھپ رہے تھے، ہم نے انہیں ڈھونڈا اور اٹھا کر سوئمنگ پول میں پھینک دیا اور پھر۔۔۔“ جاوید میانداد نے بنگلور میں پیش آنے والا دلچسپ واقعہ سنا دیا


”روی شاستری چھپ رہے تھے، ہم نے انہیں ڈھونڈا اور اٹھا کر سوئمنگ پول میں پھینک …

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان کرکٹ ٹیم کے مایہ ناز سابق کپتان جاوید میانداد نے دورہ بھارت کے دوران بنگلور میں ہولی کے موقع پر پیش آنے والا انتہائی دلچسپ واقعہ سنا کر ماضی کی یادیں تازہ کر دی ہیں۔

تفصیلات کے مطابق جاوید میانداد نے کہا کہ پاکستانی ٹیم بھارت کے دورے پر تھی اور ہوٹل میں زیادہ کچھ کرنے کو نہیں تھا لہٰذا ہم اپنا زیادہ تر وقت ہوٹل میں گزارتے تھے اور ہولی کے موقع پر ایک دوسرے کو رنگ لگانے اور سوئمنگ پول میں پھینکتے رہے اور اس دوران روی شاستری کو بھی نہ بخشا جو اس وقت بھارتی کرکٹ ٹیم کے کوچ ہیں۔

انہوں نے بتایا ”بنگلور ٹیسٹ میچ کے دوران دونوں ٹیمیں ایک ہی ہوٹل میں ٹھہری تھیں اور وہاں زیادہ کچھ کرنے کو نہیں تھا۔ شام کے وقت ہم سب اکٹھے وقت گزارتے تھے اور ہولی کا سیزن چل رہا تھا۔ ہوٹل میں مقیم لوگوں نے ہولی کا تہوار منانا شروع کر دیا۔ مجھے اچھی طرح یاد ہے کہ ہم اس کے کپتان عمران خان کے کمرے میں بھی داخل ہو گئے اور ایک دوسرے کو رنگ لگاتے رہے، حتیٰ کہ ہم نے بھارتی کرکٹرز کو بھی نہیں بخشا اور یقینا انہیں اس سے کوئی مسئلہ نہیں تھا۔“

جاوید میانداد نے کہا کہ ” روی شاستری ہم سے چھپ رہے تھے لیکن ہم ان کے کمرے میں داخل ہو گئے اور انہیں اٹھا کر ہوٹل کے سوئمنگ پول میں پھینک دیااور ہم سب نے ایک دوسرے کیساتھ خوب مزے کئے۔ یہ پاکستانی ٹیم کا سب سے بہترین دورہ بھارت تھا اور ہمیں ہر جگہ آنے کی دعوت دی جاتی تھی ،ہم سب نے ایک ساتھ ہولی منائی۔ ہر کسی کو ایک دوسرے کے تہوار میں شامل ہونا چاہئے، مجھے اس میں کوئی قباحت نظر نہیں آتی۔“

مزید : کھیل



جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے