قومی کرکٹ اکیڈمی کو قومی ہائی پرفارمنس سینٹر میں بدلنے کا فیصلہ، قومی اکیڈمی کی ری سٹرکچرنگ کا پروگرام کس غیر ملکی نے بنا کر دیا ہے؟ تفصیلات سامنے آ گئیں

قومی کرکٹ اکیڈمی کو قومی ہائی پرفارمنس سینٹر میں بدلنے کا فیصلہ، قومی اکیڈمی کی ری سٹرکچرنگ کا پروگرام کس غیر ملکی نے بنا کر دیا ہے؟ تفصیلات سامنے آ گئیں


قومی کرکٹ اکیڈمی کو قومی ہائی پرفارمنس سینٹر میں بدلنے کا فیصلہ، قومی اکیڈمی …

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی)نے اہم ترین پیش رفت کرتے ہوئے قومی کرکٹ اکیڈمی (این سی اے)کو قومی ہائی پرفارمنس سینٹر میں تبدیل کرنےکا فیصلہ کر لیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق انگلینڈ اینڈ ویلز کرکٹ بورڈ (ای سی بی) کے سابق ڈائریکٹر ڈیوڈ پارسنس نے پی سی بی کو قومی اکیڈمی کی ری سٹرکچرنگ کیلئے ایک مفصل پروگرام بناکر دیا ہے جس سے ڈومیسٹک کرکٹ اور انٹرنیشنل کرکٹ میں فاصلہ کم ہوگا اور جو کھلاڑی جونیئر سطح پر پاکستانی سسٹم میں داخل ہوگا اس کا ریکارڈ مرتب ہوگا اور پھر وہ سسٹم سے غائب نہیں ہوگا۔

ڈیوڈ پارسنس نے کنسلٹنٹ کی حیثیت سے چندماہ قبل لاہور کا دورہ کیا تھا اور ان کی رپورٹ پر قومی اکیڈمی کے ڈھانچے کو تبدیل کرکے آئندہ ماہ این سی اے کو قومی ہائی پرفارمنس سینٹر میں تبدیل کردیا جائے گا۔پی سی بی کے چیف ایگزیکٹیو آفیسر (سی ای او) وسیم خان کا کہنا ہے کہ یہ تاثر غلط ہے کہ ڈیوڈ پارسنس ہی ہائی پرفارمنس سینٹر کے نئے سربراہ ہوں گے لیکن نئی تقرریوں کیلئے ان سے مشاورت کی جائے گی اور نئے لوگوں کا تقرر ان کے تجربے اور مہارت کو سامنے رکھتے ہوئے کیا جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ عید سے قبل جب تمام درخواستیں مل جائیں گی تو نئے لوگوں کا تقرر کرتے وقت ڈیوڈ پارسنس کو بھی انٹرویو میں شامل کیا جائے گا۔وسیم خان کا کہنا ہے کہ مئی کے پہلے یا دوسرے ہفتے تک تمام تقرریاں مکمل کرکے پاکستان کرکٹ کیلئے ایک تاریخی سنگ میل عبور کرلیں گے۔ اسی طرح کے سینٹرز کراچی، ملتان،کوئٹہ، راولپنڈی اور پشاور میں بھی کام کریں گے۔

وسیم خان نے کہا کہ ڈومیسٹک کرکٹ ڈیپارٹمنٹس کو قومی ہائی پرفارمنس سینٹر میں ضم کردیا جائے گا،ڈومیسٹک کرکٹ سے نکلنے والے جونیئر کھلاڑی کو ہائی پرفارمنس سینٹر میں تربیت دی جائے گی۔پاکستان کے ناکام سسٹم کو کوالی فائیڈ کوچز اور ماہرین کی مدد سے اپ گریڈ کیا جائے گا اور اس سسٹم میں نئی جان ڈالی جائے گی۔ہائی پرفارمنس سینٹر کا ڈائریکٹر براہ راست ڈومیسٹک کرکٹ کو بھی دیکھے گا۔

وسیم خان نے کہا کہ ڈیوڈ پارسنس نے پاکستانی سسٹم کو سامنے رکھ کر اور پاکستانی کوچز سے بات کرکے نیا سسٹم بنایا ہے۔اس جدید ہائی پرفارمنس سینٹر میں جمنازیم اور فٹنس کی سہولتوں کو اپ گریڈ کیا جارہا ہے۔بدھ کو پی سی بی نے ڈائریکٹر ہائی پرفارمنس کی تلاش بھی شروع کر دی ہے اور پی سی بی نے ڈائریکٹر ہائی پرفارمنس ، ہیڈ ہائی پرفارمنس کوچنگ ، ہیڈ انٹرنیشنل پلیئر ڈویلپمنٹ اور ہائی پرفارمنس آپریشنز منیجر کیلئے اشتہار دیا ہے۔

مزید :

کھیل



جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے