ماہ رمضان ، سحر و افطار میں کھانے پینے کی وہ کون سی چیزیں ہیں جو آپ کی صحت کے لئے انتہائی نقصان دہ ثابت ہو سکتی ہیں ؟تفصیلات جانئے

ماہ رمضان ، سحر و افطار میں کھانے پینے کی وہ کون سی چیزیں ہیں جو آپ کی صحت کے لئے انتہائی نقصان دہ ثابت ہو سکتی ہیں ؟تفصیلات جانئے


ماہ رمضان ، سحر و افطار میں کھانے پینے کی وہ کون سی چیزیں ہیں جو آپ کی صحت کے …

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)رمضان المبارک کا مقدس مہینہ ایک بار پھر اپنی تمام تر رحمتوں، برکتوں، سعادتوں اور رعنائیوں کے ساتھ ہم پر جلوہ افروز ہے،دنیا بھر میں ماہِ رمضان کے دوران روزے داروں کی مختلف غذائی عادات سامنے آتی ہیں، بہت سے لوگ ایسی بُری غذائی عادتوں کو اپناتے ہیں جن سے حتی الوسع  گریز کرنا صحت کے لئے انتہائی ضروری ہے جبکہ طبی ماہرین بھی سحر و افطار میں مرغن غذاؤں سے ہر ممکن پرہیز کا مشورہ دیتے ہیں۔اس مرتبہ16 گھنٹے سے زیادہ کا روزہ ہے ،جس کی وجہ سے ہمارے جسم پر اس کا خاصہ اثر پڑنے کا امکان تو موجود ہے ،خاص طور سے گرمی کے رمضان میں دھوپ میں نکلنے سر چکراتا اور کمزوری کا احساس ہوتا ہےچنانچہ اس ماہ مقدس میں ہمیں اپنی خوراک کا پورا خیال رکھنا چاہیے۔غذائی ماہرین کا کہنا ہے کہ سحری میں پروٹین سے بھرپور خوراک کھانی چاہئے تاکہ دن بھر آپ کو بھوک کا احساس بھی نہ ہو اور کمزوری بھی محسوس نہ ہو ،سحری میں شوربے والے سالن کا استعمال کرنا چاہئے جس میں تیل اور مصالحے کم ہوں  اور  جو باآسانی ہضم ہوسکے۔اس ماہ مقدس میں ہمیں  کوشش کرنی چاہئے  کہ ہماری غذا میں ریشہ کا زیادہ استعمال ہو، مثلاًپھل اور ہری سبزیوں کا استعمال کریں کیونکہ یہ آہستہ آہستہ ہضم ہوتی ہیں اور ان کے استعمال سے دن میں پیٹ خالی محسوس نہیں ہوتا اور ان کے ذریعے جسم کو پانی بھی مہیا ہوتا رہتا ہے،سحری میں بھی ہم کسی طرح کا لیکوئیڈ بھی جیسے دودھ ، انجیراور کھجور کا شیک بناکر بھی پی سکتے ہیں ۔

آج ہم ایک بار پھر آپ کو بتاتے ہیں کہ وہ کون سی چیزیں ہیں جن سے آپ سحر و افطار میں پر ہیز کر کے نہ صرف اپنا روزہ برقرار رکھ سکتے ہیں بلکہ آپ کا سارا دن بھی انتہائی خوشگوار گذرے گا اور آپ کو طبی حوالے سے بھی مسائل کا سامنا نہیں کرنا پڑے گا ۔اکثر و بیشتر روزہ دار سحری کے وقت زیادہ پانی پی لیتے اورسوچے سمجھے بغیر  مرغن اور روغنی کھانوں کا استعمال کرنے سے زرا بھی نہیں ہچکچاتے بلکہ بڑے ذوق و شوق سے روغنی غذائیں تناول کرتے ہیں حالانکہ غذائی ماہرین اس سے منع کرتے ہیں،روغنی کھانے کی وجہ سے دن میں آپ کیلئے روزہ رکھنا مشکل ہوسکتا ہے۔افطار کے وقت ٹھنڈا پانی پینا یہ بھی بری عادتوں میں شمار کیا جاتا ہے اور روزے دار کو اس سے گریز کرنا چاہیے۔افطار کے فورا بعد میٹھی اشیاء کھانا بھی کوئی اچھی عادت نہیں ہے ، اگر آپ کو بھی ایسی کوئی عادت ہے تو فوری طور پر ہی ترک کردینا چاہئے۔علاوہ ازیں مصالحوں اور نمک کا کثرت سے استعمال ، چکنائی سے بھرپور غذائیں زیادہ کھانا اور گیس والے مشروبات پینا یہ تمام ایسی عادات ہیں جن کو رمضان میں تبدیل کیا جانا چاہیے۔اس سلسلے میں ماہرین نے ماہِ صیام کے دوران آدھا دن گزر جانے کے بعد محنت طلب ورزشوں کی ضرورت پر زور دیا ہے۔

مزید : Ramadan Page /Ramadan News /پکوان



جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے