مصباح الحق کو 2 بھاری ذمہ داریاں کیوں دی اور اس سے کیا نقصان ہو رہا ہے؟ محمد یوسف ایک مرتبہ پھر میدان میں آ گئے

مصباح الحق کو 2 بھاری ذمہ داریاں کیوں دی اور اس سے کیا نقصان ہو رہا ہے؟ محمد یوسف ایک مرتبہ پھر میدان میں آ گئے


مصباح الحق کو 2 بھاری ذمہ داریاں کیوں دی اور اس سے کیا نقصان ہو رہا ہے؟ محمد …

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان کے مایہ ناز سابق ٹیسٹ کرکٹر محمد یوسف نے ایک مرتبہ پھر پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کے چیف سلیکٹر و ہیڈ کوچ مصباح الحق کے ’ڈبل رول‘ پر سوال اٹھادیا ہے جن کا کہنا ہے کہ ایک ہی شخص کو دو بھاری ذمہ داریاں سونپنا سمجھ سے بالاتر ہے۔

تفصیلات کے مطابق پی سی بی نے مصباح الحق کو ہیڈ کوچ کے ساتھ چیف سلیکٹر کی ذمہ داریاں بھی سونپی ہیں اور محمد یوسف سمیت کئی سابق کرکٹرز اس کو مفادات کا ٹکراﺅ قرار دیتے ہوئے ون مین شو کو پاکستان کرکٹ کیلئے نقصان دہ قرار دیتے رہے ہیں۔ سابق کپتان نے ایک انٹرویو میں اپنا موقف دہراتے ہوئے کہاکہ میری سمجھ سے بالاتر ہے کہ ایک ہی شخص کو اتنی بڑی ذمہ داریاں ایک ساتھ کیوں دیدی گئی ہیں، جس طرح وہ کام کررہے ہیں اس میں کوئی پلان نظر نہیں آتا، پاکستان کرکٹ نے پیچھے کی جانب سفر شروع کردیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ سلیکٹرز نے محمد حفیظ اور شعیب ملک کو قومی ٹیم میں واپس کیوں بلایا؟ پاکستان کو ٹی 20 ورلڈکپ رواں سال آسٹریلیا میں کھیلنا ہے جہاں دونوں سینئرز کی کارکردگی کبھی اچھی نہیں رہی، اس طرح کے فیصلے پاکستان کرکٹ کیلئے نقصان دہ ثابت ہوں گے۔

واضح رہے کہ محمد یوسف قبل ازیں اپنے ایک بیان میں ہیڈ کوچ کے عہدے کیلئے وقار یونس کو موزوں قرار دیتے رہے ہیں جو اس وقت قومی ٹیم کے باﺅلنگ کوچ کی ذمہ داریاں نبھا رہے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ سابق پیسر کم از کم انٹرنیشنل سطح پر ٹیم کی کوچنگ کا تجربہ تو رکھتے ہیں،ان کی رہنمائی میں پاکستان ٹیم درست سمت میں گامزن ہوسکتی تھی،مصباح الحق ناتجربہ کاری کی وجہ سے کرکٹرز کو کوئی ٹھوس پلان نہیں دے پا رہے۔

مزید : کھیل



جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے