”میں بے صبری سے باقی میچز کھیلنے کیلئے پاکستان آنے کا انتظار کر رہا ہوں“ بین ڈنک نے تازہ ترین بیان میں پاکستانیوں کے دل ’فتح‘ کر لئے

”میں بے صبری سے باقی میچز کھیلنے کیلئے پاکستان آنے کا انتظار کر رہا ہوں“ بین ڈنک نے تازہ ترین بیان میں پاکستانیوں کے دل ’فتح‘ کر لئے


”میں بے صبری سے باقی میچز کھیلنے کیلئے پاکستان آنے کا انتظار کر رہا ہوں“ بین …

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) فائیو کے سپر سٹار بین ڈنک نے کہا ہے کہ میں رواں سال کے آخر میں پی ایس ایل کے بقیہ میچز کھیلنے اور لاہور قلندرز کو ٹرافی جتوانے کیلئے پاکستان آنے کا بے صبری سے منتظر ہوں۔

تفصیلات کے مطابق بین ڈنک نے پی ایس ایل کے حالیہ ایڈیشن میں لاہور قلندرز کی نمائندگی کرتے ہوئے چند انتہائی عمدہ اننگز کھیلیں اور ایک ہی اننگز میں سب سے زیادہ چھکے لگانے کا ریکارڈ اپنے نام کرتے ہوئے کراچی کنگز کیخلاف ناقابل یقین فتح دلا کر لاہور قلندرز کو پلے آف مرحلے تک پہنچانے میں بھی اہم کردار ادا کیا، اپنی عمدہ کارکردگی کی بدولت وہ ایک ہی میچ کے بعد پاکستانیوں بالخصوص لاہوریوں کی آنکھ کا تارا بن گئے۔

پی ایس ایل کے پانچویں ایڈیشن کا لیگ مرحلہ ہی ختم ہوا تھا کہ کورونا وائرس کے باعث ٹورنامنٹ کے بقیہ میچز ملتوی کرنا پڑ گئے جس کے بعد تمام غیر ملکی کھلاڑی اپنے اپنے وطن لوٹ گئے اور مقامی کھلاڑی بھی پاکستان میں لاک ڈاﺅن کے بعد اس وقت گھروں میں محصور ہیں اور کورنا وائرس کے خلاف جاری جنگ لڑنے میں مصروف ہیں۔

بین ڈنک نے اپنے تازہ ترین بیان میں کہا کہ لاہور قلندرز کی ٹیم بہترین مومینٹم حاصل کر کے پلے آف مرحلے میں پہنچی تھی اور میں اس سفر کا آغاز وہیں سے کرنا چاہتا ہوں جہاں ختم ہوا۔ ہماری ٹیم جیت کا مومینٹم حاصل کر چکی تھی اور کرس لین نے بھی پلے آف سے پہلے کھیلے گئے آخری میچ میں شاندار سنچری سکور کی، امید کرتے ہیں کہ رواں سال کے آخر میں ہم پھر اکٹھے ہوں گے اور بقیہ دو میچز بھی اسی طرح کھیلتے ہوئے ٹرافی جیتیں گے۔

انہوں نے کہا کہ پلے آف مرحلے سے پہلے دنیا میں کچھ بہت ہی سنجیدہ معاملات چل رہے ہیں جنہیں حل کرنا بہت ضروری ہے لیکن سچ بات تو یہ ہے کہ میں مستقبل قریب میں پاکستان واپس آ کر ملتوی شدہ میچز کھیلنے کیلئے بہت بے تاب ہوں اور بے صبری سے اس وقت کا انتظار کر رہا ہوں۔

مزید : کھیل /PSL /PSL News Update



جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے