’میں سمجھتا تھا وہ میری بیٹی ہے لیکن ڈی این اے ٹیسٹ میں حقیقت سامنے آئی تو زندگی کا سب سے بڑا جھٹکا لگ گیا‘

’میں سمجھتا تھا وہ میری بیٹی ہے لیکن ڈی این اے ٹیسٹ میں حقیقت سامنے آئی تو زندگی کا سب سے بڑا جھٹکا لگ گیا‘


’میں سمجھتا تھا وہ میری بیٹی ہے لیکن ڈی این اے ٹیسٹ میں حقیقت سامنے آئی تو …

’میں سمجھتا تھا وہ میری بیٹی ہے لیکن ڈی این اے ٹیسٹ میں حقیقت سامنے آئی تو زندگی کا سب سے بڑا جھٹکا لگ گیا‘

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) امریکہ میں ایک لڑکی نے اسی کم عمر بچے کو جنسی زیادتی کا نشانہ بناڈالا جس کی وہ آیا تھی اور اس کی دیکھ بھال کی ذمہ داری اس پر تھی۔ ڈیلی سٹار کے مطابق اس 20سالہ لڑکی کا نام لی کورڈیس ہے۔ وہ 17سال کی تھی جب اسے اس 10سالہ بچے کے والدین نے آیا کی نوکری پر رکھا اور اس نے بچے کے ساتھ جنسی تعلق قائم کرنا شروع کر دیا۔ تب سے وہ اس کے ساتھ جنسی تعلق قائم کرتی آ رہی تھی۔

اسی دوران کورڈیس کی ڈینیئل رابنز نامی نوجوان کے ساتھ شادی بھی ہو گئی مگر اس نے بچے کے ساتھ تعلق جاری رکھا۔ اسی دوران کورڈیس نے ایک بیٹی کو جنم دیا جسے اس کا شوہر اپنی بیٹی سمجھتا رہا لیکن اب انکشاف ہوا ہے کہ اس بیٹی کا باپ دراصل وہ 13سالہ لڑکا ہے۔ چند ماہ قبل کورڈیس کے اس بچے کے ساتھ جنسی تعلق کا بھانڈا پھوٹ گیا۔ بچے کے والدین نے پولیس کو رپورٹ کی جس نے کورڈیس کو گرفتار کرکے عدالت میں پیش کر دیا۔ عدالت نے کورڈیس کی بیٹی کا ڈی این اے ٹیسٹ کروانے کو کہا جس میں ثابت ہو گیا کہ اس کا باپ وہ کم عمر لڑکا ہے۔ لڑکے نے بھی عدالت میں بیان دیا کہ کورڈیس جب سے اس کی آیا بنی ہے تب سے اس کے ساتھ یہ حرکت کرتی آ رہی ہے۔ اپنی بیوی کی یہ کرتوت سامنے آنے پر دل گرفتہ ڈینیئل روبنز کا کہنا تھا کہ ”میں سوچ بھی نہیں سکتا تھا کہ میری بیوی ایسی قبیح حرکت کرے گی۔ میں بیٹی کا باپ بن کر بہت خوش تھا، مگر میں نہیں جانتا تھا کہ جسے میں اپنی بیٹی سمجھتا آ رہا ہوں وہ میری بیٹی ہی نہیں ہے۔ “کورڈیس کو آئندہ ہفتے سزا سنائی جائے گی۔

مزید : ڈیلی بائیٹس



جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے