’میں نے اپنے باپ کو تحفہ دینے کے لیے یہ تحفہ دینے کا سوچا لیکن یہ معلوم نہیں تھا اس کی وجہ سے خاندان تباہ ہوجائے گا‘

’میں نے اپنے باپ کو تحفہ دینے کے لیے یہ تحفہ دینے کا سوچا لیکن یہ معلوم نہیں تھا اس کی وجہ سے خاندان تباہ ہوجائے گا‘


’میں نے اپنے باپ کو تحفہ دینے کے لیے یہ تحفہ دینے کا سوچا لیکن یہ معلوم نہیں …

لندن( مانیٹرنگ ڈیسک) برطانیہ میں ایک بیٹے نے اپنے باپ کو تحفے میں اپنے شجرہ نسب کی تفصیل دینے کا فیصلہ کیا۔ اس کے لیے اس نے ڈی این اے ٹیسٹ کرنے والی دو کٹس خریدیں تاکہ ان سے ٹیسٹ کرکے معلوم کر سکے کہ اس کا شجرہ نسب کیا ہے لیکن جب ان کے ٹیسٹ کے نتائج آئے تو ایسا انکشاف ہوا کہ یہ تحفہ ان کا خاندان ہی تباہ کر گیا۔ دی مرر کے مطابق اس نوجوان نے ویب سائٹ Imgurپر یہ واقعہ بیان کیا ہے۔ اس نے کہا کہ میری والدہ 2017ءمیں انتقال کر گئی تھیں۔ ہم بہن بھائی اکثر متجسس رہتے تھے اور آپس میں اس موضوع پر بات کرتے تھے کہ ہمارا شجرہ نسب کیا ہے۔ ہم اپنے باپ سے پوچھتے لیکن وہ بھی بتانے سے قاصر رہتے، وہ جواب دیتے کہ انہوں نے اپنے والدین سے کبھی اس حوالے سے پوچھا ہی نہ تھا۔

نوجوان لکھتا ہے کہ ”میں نے بالآخر اپنے والد کو تحفے کے طور پر شجرہ نسب کی تفصیل دینے کا فیصلہ کیا اور ڈی این اے ٹیسٹ کٹس لے آیا لیکن جب نتائج سامنے آئے تو پتا چلا کہ وہ شخص میرا باپ ہی نہیں تھا، جسے میں تمام عمر سے باپ سمجھتا آ رہا تھا۔ میری پیدائش میرے ماں باپ کی شادی کے 17سال بعد ہوئی تھی۔ ان کی کامیاب شادی 40سال تک میری ماں کی موت تک چلی۔ میرے والد اب بھی میری والدہ کی بہت تعریف کرتے ہیں اور کہتے ہیں ان کا ازدواجی تعلق ہمیشہ انتہائی شاندار رہا اور ان دونوں میں کبھی کوئی جھگڑا نہیں ہوا لیکن ڈی این اے کے نتائج سے جو بات سامنے آئی، اس سے میں بکھر کر رہ گیا۔ میں نے جب یہ بات اپنے والد کو بتائی تو میری آنکھوں میں آنسو تھے لیکن انہوں نے سرے سے یہ بات ماننے سے ہی انکار کر دیا اور کہا کہ میری ماں نے ایسا کچھ نہیں کیا تھا اور میں انہی کا بیٹا ہوں۔ وہ اپنی بات پر مصر ہیں لیکن میں جانتا ہوں کہ ڈی این اے ٹیسٹ کے نتائج غلط نہیں ہیں۔ تاہم میں اب بھی اس شخص سے بہت محبت کرتا ہوں جسے میں بچپن سے اپنا باپ سمجھتا آیا ہوں اور میں اپنی ماں سے بھی محبت کرتا ہوں، تاہم میرا سوال اب تبدیل ہو گیا ہے۔ پہلے میں اپنا شجرہ نسب جاننا چاہتا تھا اور اب میں جاننا چاہتا ہوں کہ میرا باپ کون ہے؟“

مزید : ڈیلی بائیٹس /برطانیہ



جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے