ندیم افضل چن اپنے مختارے کو لے کر سب کے سامنے آگئے

mobile logo


ندیم افضل چن اپنے ” مختارے” کو لے کر سب کے سامنے آگئے

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) وزیراعظم کے ترجمان ندیم افضل چن اپنے مختارے کو لے کر سب کے سامنے آگئے، یاد رہے کہ ندیم افضل چن کا مختارے کو کیا گیا واٹس ایپ آڈیو پیغام لیک ہوا تھاجس کے بعد بیشتر نوجوان اپنی روزمرہ گفتگو میں بھی مختارے کا ذکر کرنے لگے تھے، ندیم افضل چن نے بتایا کہ آڈیو ان دونوں فریقین کی طرف سے لیک نہیں ہوئی ،عوام کی آگاہی کے لیے  اچھا میسج چلا گیا لیکن یہ ذاتی میسج تھا، یہ لیک کیسے ہوتاہے؟ اس کا پتہ لگانا ہی پڑے گا۔ 

اپنی ایک یوٹیوب ویڈیو میں گفتگو کرتے ہوئے ندیم افضل چن نے پنجابی زبان میں بتایاکہ ” حکومت نے بھی کچھ نرمی کی ہے ، بڑے دنوں کے بعدمیری اپنے مختارے کیساتھ ملاقات ہوئی ، بڑے دن یہ گھر رہاہے ، میں نے سوچاکہ آج آپ کی بھی ملاقات کرائیں، حال احوال پوچھنے کے بعد گھر رہنے کے بارے میں ندیم افضل چن کے سوال پر مختارے نے بتایا کہ”ان دنوں اچھا محسوس کیا، آپ کے ساتھ 2007 سے لے کر اب تک ہوں، اکیس دن پہلی دفعہ گھر رہا، اچھا لگا،آپ کے میسج اور ڈرانے کی وجہ سے میں خود اور بچے بھی محفوظ رہے، آپ نے میری زندگی پربڑی مہربانی کی“۔

ندیم افضل چن نے بات ٹوکتے ہوئے کہاکہ ”وہ تو ٹھیک ہے لیکن اب آپ مشہور بھی بڑے ہوگئے ہیں، مجھ سے بھی زیادہ ۔۔“۔پھر مختارے نے ہنستے ہوئے کہاکہ بس روایتی میڈیا اور سوشل میڈیا نے مشہور کردیا، کرونا کے حوالے سے محسوس کیا کہ اچھا کہا، یہ نہ گالی تھی، جس پر ندیم افضل چن نے کہاکہ وہ ہمارا ذاتی معاملہ تھا، عام حالات میں گالی دیتا بھی نہیں لیکن یہ بتائیں کہ اتنے دن گھر رہے ہو،میں آپ کو بھی منع کرتارہا لیکن آپ کہتے کہ سیاست کریں، دیکھو جو لوگ کسی سے ملتے رہے،وہ بیمار پڑے ہیں، اب بتائیں ۔اس پر مختارے نے جواب دیا کہ آپ نے جو کہا ، وہ تو بڑا زبردست رہا،بچوں کے لیے بھی، میں خود بہت اچھا محسوس کررہاہوں۔

ندیم افضل چن نے مختارے سے استفسار کیا کہ وہ آڈیو لیک کیسے ہوئی ، َ جو میں نے آپ کو بھیجی تھی ، اس پر مختارے نے قسم اٹھاتے ہوئے کہاکہ یہ میرے سے لیک نہیں ہوئی ، پتہ نہیں کہاں سے لیک ہوئی ؟ندیم افضل چن نے کہاکہ یا تو آپ نے لیک کی ہے یا میں نے کی جس پر مختارے کا کہناتھاکہ حلفاً کہہ سکتا ہوں کہ مجھ سے لیک نہیں ہوئی ۔

وزیراعظم کے ترجمان نے بتایاکہ ”میرے سے بھی لیک نہیں ہوئی اور یہ کہتا ہے کہ مجھ سے بھی لیک نہیں ہوئی ، پھر ڈھونڈنی ضرور پڑے گی ، واٹس ایپ کا وائس میسج بھی اگر لیک ہوتا ہے تو سوچنا پڑے گا کہ کیسے ہوتا ہے؟ مختارے کیساتھ ساتھ جہاں بڑی بڑی چیزیں ہوتی ہیں، مختارے کے میسج سے بہتر کوئی آگاہی مہم نہیں ہوسکتی تھی لیکن یہ میرا پرسنل میسج تھا، یہ بتانا اور ڈھونڈناضرور پڑے گا کہ یہ کیسے لیک ہوتا ہے جس پر مختارے نے بھی ہاں میں ہاں ملائی اور کہاکہ ضرور ڈھونڈنی چاہیے ۔

آخر میں ندیم افضل چن نے بتایاکہ بڑے لوگ پوچھتے تھے کہ مختارے سے ملے کبھی نہیں، یہ بڑے دنوں بعد حافظ آباد سے آیا، میری اپنی ملاقات آج ہوئی تو سوچا کہ آپ سے بھی ملا دیں۔ویڈیو دیکھئے 

اپنے ایک اور انٹرویو میں مختار حسین باجوہ عرف مختارے کا کہنا تھا کہ اس آڈیو کے لیک ہونے پر بہت غصہ آیاتاہم بعد میں ہم سب نے اس انجوائے کیا ۔انہوں نے کہا تحقیق کر رہے ہیں کو کس نے لیک کی ،ابھی تک نہیں پتہ۔ان کا کہنا تھا کہ ندیم افضل چن نے پہلی بار اتنے غصے میں کہا کہ کورونا وائرس کی وجہ سے حالات اتنے خراب ہوگئے ہیں ،سیاسی سرگرمیوں کو چھوڑو اور گھر چلے جاﺅ میں پھرمیں نے اس بات پر سنجیدگی سے سوچا اور اپنی بیو ی بچوں کے پاس گھر چلا گیا ۔انہوں نے گالیاں نہیں دیں بلکہ میٹھی گالیاں دی ہیں ،میں ندیم افضل چن کے ساتھ پندرہ سال سے ہوں ،ہم میں بہت پیار ہے ۔

اپنے خصوصی انٹرویو میں مختار احمد باجوہ کا لوگوں کو انتباہ دکرتے ہوئے کہنا تھا کہ مجھے مختارا ں کہنے کا حق صرف اور صرف ندیم افضل چن  کا ہے لہذا دوسرے تمام لوگوں سے میں کہنا چاہوں گا کہ ان کے علاوہ کوئی بھی مجھے اس لقب سے نہ پکارے لہذا ندیم افضل چن صاحب کی محبت اور خلوص کے باعث ان کو مکمل اختیار ہے کہ وہ مجھے جس مرضی نام سے پکار سکتے ہیں۔کرونا وائرس پر بات کرتے ہوئے مختاراحمد باجوہ کا کہنا تھا کہ شروع شروع میں مجھے یہ سب مذاق لگتا تھا لیکن ندیم افضل چن صاحب کے اس میسج کے بعد مجھے اس کی سنگینی سمجھ میں آئی اور میں نے خود کو اپنی بیوی اور بچوں کے ساتھ 21 دن کے لیے گھر میں قرنطینہ کر لیا تاکہ میں اور میرے بچے اس مہلک وائرس سے محفوظ رہ سکیں۔

ندیم افضل چن کی اس ویڈیو پر ایک صاحب نے لکھا  کہ”چن صاحب شروع میں سُنا تھا کہ یہ مسیج کسی گروپ میں کیا گیا ہے اور اس گروپ سے لیک ہوا ھے ۔۔؟”

صحافی عاصمہ شیرازی نے لکھا کہ ” یہ معلوم ہونا چاہیے کہ واٹس ایپ نوٹ کس نے لیک کیا، مختارے نے بھی اگر لیک نہیں کیا تو پھر کس نے کیا ؟مختارا باہر آچکا ہے لیکن اسے دوبارہ واپس بھیجیں ٗ”

ایک اور صاحب نے لکھا کہ” اس کا مطلب یہ ہے کہ مختارا آپ کی بات مان کر گھر چلا گیا تھا، اب حکومت کا لاک ڈاون میں نرمی کے بعد مختارا پھر نکل آیا  "

زبیر نے لکھا کہ "ہم مختارے کو تسلی سے گھر بیٹھے رہنے پر مبارکباد پیش کرتے ہیں”۔

 ایک اور صارف نے لکھا کہ ّ مختارا مشہور ہستی ، لیجنڈ بن گیا”۔

ایک اور صاحب مختارے کی فہم و فراست کے کچھ قائل دکھائی دیئے اور پوچھا کہ "ندیم افضل چن صاحب آپ کو صلاح مختارے نے نہیں دی کہ پی ٹی آئی میں مت جائیں، آپ جیسے لوگوں کے وہاں جانے کی ضرورت نہیں”

زاہد نے لکھا ” مختاریا، لاک ڈائون میں نرمی کا نتیجہ کچھ اچھا دکھائی نہیں دیتا، لیکن حکومت اندر کی بات بتا نہیں رہی "

ایک اور صاحب نے مذاقاً لکھا کہ ” کل مختارا نئی آڈیو ریلیز کرے گا” 

مزید :

ڈیلی بائیٹس



جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے