وزیر اعظم کے احساس کیش ایمرجنسی پروگرام کو سندھ میں۔۔۔حلیم عادل شیخ نے پیپلز پارٹی کی صوبائی حکومت پر سنگین الزام عائد کر دیا

وزیر اعظم کے احساس کیش ایمرجنسی پروگرام کو سندھ میں۔۔۔حلیم عادل شیخ نے پیپلز پارٹی کی صوبائی حکومت پر سنگین الزام عائد کر دیا


وزیر اعظم کے احساس کیش ایمرجنسی پروگرام کو سندھ میں۔۔۔حلیم عادل شیخ نے پیپلز …

کراچی(ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان تحریک انصاف کے مرکزی نائب صدر اور سندھ اسمبلی میں پارلیمانی لیڈر حلیم عادل شیخ نے کہا ہے کہ ویر اعظم کے احساس ایمرجنسی کیش پروگرام پر سندھ میں سیاسی پوائنٹ سکورنگ کی کوشش کی جارہی ہے،احساس کیش ایمرجنسی پروگرام میں کرونا اور لاک ڈاؤن سے متاثرہ ہونے والے خاندانوں کے لئے ہے۔

تفصیلات کے مطابق احساس ایمرجنسی کیش پروگرام کے حوالے سے اپنے بیان میں حلیم عادل شیخ کا کہنا تھا کہ اس پروگرام میں ایک کروڑ بیس لاکھ خاندانوں کو 144 ارب روپے دیئے جارہے ہیں، یہ پروگرام سیاست پسند نہ پسند سے پاک ہے غربت کی لکیر سے نیچے افراد کو میسج کے ذریعے مدد کی جارہی ہے،پروگرام کی رقم بئنک کے ذریعے دی جارہی ہے تقسیم کرانا ضلع انتظامیہ کی ذمہ داری ہے،تین صوبوں میں کہیں بھی تحریک انصاف کے رہنماؤں یا نمائندوں نے اس کو سیاسی مقاصد کے لیے استعمال نہیں کیا، افسوس کہ سندھ میں احساس ایمرجنسی پروگرام پر پیپلزپارٹی کے نمائندے سیاست کرنے کی کوشش کر رہے ہیں،سندھ میں ڈپٹی کمشنر کو مقامی ایم این اے ،ایم پی ایز رکھواتے ہیں جو ان کی کمداری کرتے ہیں،چیف سیکریٹری بھی ڈپٹی کمشنرز کے اس طرح کے روویوں کو روکنے میں ناکام ہوئے ہیں،سندھ کے مختلف اضلاع میں ڈپٹی کمشنر اپنے سیاسی آقاﺅں کو فائدہ دے رہے ہیں، احساس کیش ایمرجنسی پروگرام کو بینظیر انکم سپورٹ پروگرام کی جانب سے دی جانے والی رقم قرار دیا جارہا ہے جو نہایت ہی افسوسناک ہے۔

انہوں نے کہا کہ پیپلزپارٹی کے نمائندوں کو اگر سیاسی پوائنٹ سکورنگ کا شوق ہے تو وہ اپنے پارٹی فنڈ سے عوام کی مدد کریں،وزیر اعظم کے طرف سے 144 ارب روپے غریب عوام کو دیئے جارہے ہیں،اس پروگرام میں پیپلزپارٹی اپنا جھنڈا گاڑنے کی کوشش نہ کرے، پیپلزپارٹی کے نمائندے سوشل میڈیا پر اور ڈی سیز کے ساتھ ملکر پروگرام کو بینظیر انکم سپورٹ کی رقم بتا رہے ہیں،افسوس کے سندھ حکومت نے لاک ڈاؤن لگا کر بیس لاکھ خاندانوں کو راشن پہنچانے کا اعلان کیاتھا، وہ بیس لاکھ خاندانوں کو راشن نہیں مل رہا تھا تب تمام پیپلزپارٹی کے نمائندے بلوں میں چھپ گئے تھے، جیسے ہی ویر اعظم عمران خان کا کیش پروگرام آیا ہے سب لوگ بلوں سے باہر نکل کر اپنی تصاویریں بنوا رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ  یہ پروگرام غریب عوام کے لئے ہے، اس کا سیاست سے کوئی تعلق نہیں ہے اور نہ ہی ہمارا کوئی ایم این اے یا ایم پی اے جاکر فوٹو سیشن کروا رہا ہے۔ ڈپٹی کمشنر اس قسم کے روویوں سے باز رہیں وہ سرکار کے ملازم ہیں کسی سیاسی نمائندوں کے ملازم نہ بنیں، چیف سیکریٹری سندھ اس پروگرام کو غیر سیاسی تقسیم کرانے میں ناکام گئے ہیں،ڈی سیز سیاسی آقاہوں کو خوش کرنے کے لئے وزیر اعظم کے غیر سیاسی عمل کو سیاسی کر رہے ہیں،برائے کرم تمام سیاسی رہنما اس پروگرام کو سیاسی بنانے سے دور رہیں ڈی سیز اپنا کام غیر سیاسی بن کر بہتر انداز سے کریں۔

مزید : علاقائی /سندھ /کراچی



جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے