پاکستان میں کورونا کے مریضوں اور اموات میں اضافہ،  دنیا میں کیسز 13 لاکھ سے بھی بڑھ گئے

پاکستان میں کورونا کے مریضوں اور اموات میں اضافہ،  دنیا میں کیسز 13 لاکھ سے بھی بڑھ گئے


پاکستان میں کورونا کے مریضوں اور اموات میں اضافہ،  دنیا میں کیسز 13 لاکھ سے …

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان میں کورونا وائرس کے مریضوں کی تعداد میں اضافہ ہوگیا ہے اور مریضوں کی تعداد 3505ہوگئی ہے۔

نیشنل کمانڈ اینڈ کنٹرول سنٹر کے مطابق پاکستان میں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران کورونا وائرس کے 397 نئے کیسزسامنے آئے ہیں جس کے بعد مریضوں کی مجموعی تعداد 3505ہوگئی ہے۔ملک بھر میں کورونا کی وجہ سے مزید ایک شخص نے جان گنوائی ہے جس کے بعد جاں بحق افراد کی تعداد 51 ہوگئی ہے۔اب تک 259 افراد اس بیماری سے صحتیاب ہوچکے ہیں۔ اس وقت کورونا وائرس کے 17 مریض ایسے ہیں جو تشویشناک حالت میں مختلف ہسپتالوں میں داخل ہیں۔

پاکستان بھر میں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 1933 لوگوں کے ٹیسٹ کیے گئے ہیں جس کے بعد ٹیسٹوں کی مجموعی تعداد 35 ہزار 875 ہوگئی ہے۔ خیال رہے کہ پاکستان میں دوسرے ملکوں کے مقابلے میں ٹیسٹوں کی رفتار اب بھی بہت کم ہے۔

نیشنل کمانڈ اینڈ کنٹرول سنٹر کے مطابق کورونا وائرس کے سب سے زیادہ مریض پاکستان میں ہیں جہاں ان کی تعداد بڑھ کر 1708 ہوگئی ہے۔ سندھ میں کورونا کے 881 ، خیبر پختونخوا میں 405، گلگت بلتستان میں 211، بلوچستان میں 202، اسلام آباد میں 82 اور آزاد جموں و کشمیر میں 16 مریض موجود ہیں۔

دنیا کی صورتحال

پوری دنیا میں کورونا کے وار تیز تر ہوتے جارہے ہیں، اس وقت دنیا بھر میں اس وبا نے 13 لاکھ 29 ہزار 825 لوگوں کو متاثر جبکہ 73 ہزار 839 لوگوں کی زندگیوں کے چراغ گل کیے ہیں۔ 2 لاکھ 77 ہزار 329لوگ ایسے ہیں جو اس وبا سے چھٹکارا حاصل کرنے میں کامیاب رہے ہیں۔

دنیا میں کورونا کے سب سے زیادہ کیسز امریکہ میں سامنے آئے ہیں جہاں مریضوں کی تعداد بڑھ کر 3 لاکھ 56ہزار 414ہوگئی ہے۔ امریکہ میں 10 ہزار 490لوگ اس وبا کے ہاتھوں اپنی زندگیاں گنواچکے ہیں۔

سپین میں کورونا وائرس کے ایک لاکھ 35 ہزار 32 مصدقہ کیسز سامنے آئے ہیں اور یہاں ہلاکتوں کی تعداد 13 ہزار 169ہوگئی ہے۔ اٹلی میں کورونا وائرس کے ایک لاکھ 32ہزار 547مصدقہ کیسز ہیں  تاہم یہاں مرنے والوں کی تعداد سب سے زیادہ ہے۔ اٹلی میں اب تک 16ہزار 523لوگ کورونا سے جنگ ہار چکے ہیں۔یورپی ملک جرمنی بھی ایسی جگہ ہے جہاں کورونا وائرس کے ایک لاکھ سے زائد کیسز ہیں تاہم یہاں شرح اموات انتہائی کم ہے۔ جرمنی میں اب تک کورونا نے 1662زندگیوں کے چراغ گل کیے ہیں۔

کورونا کے خلاف جنگ، سپریم کورٹ حکومتی اقدامات پر برہم

چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس گلزار احمد نے کورونا کی حکومتی پالیسی پر برہمی کا اظہار کیا ہے۔ انہوں نے ایک کیس کی سماعت کے دوران کہا حکومت کورونا سے کیسے نمٹ رہی ہے ،صرف میٹنگ میٹنگ ہورہی ہے اور زمین پر کچھ بھی کام نہیں ہورہاہے،اسلام آبادمیں کوئی ایساہسپتال نہیں جہاں میں جا سکوں،اسلام آبادمیں تمام ہسپتالوں کی اوپی ڈیز بند کردی گئی ہیں ،ملک میں صرف کورونا کے مریضوں کاعلاج ہو رہا ہے ۔ اپنی اہلیہ کو چیک کرانے کیلئے ایک بہت بڑا ہسپتال کھلواناپڑا،نجی کلینکس اور ہسپتال بھی بند پڑے ہیں ،ملک میں کس طرح کی میڈیکل ایمرجنسی نافذ کی ہے ؟ جب ہسپتالوں کی ضرورت پڑی تو انہیں بند کردیا گیا، ہرہسپتال اورکلینک لازمی کھلا رہنا چاہئے۔

پاکستان میں کورونا کیسز کی تعداد کہاں تک جا سکتی ہے ؟

پاکستان کے معروف سائنسدان ڈاکٹر عطا الرحمان کا کہنا ہے کہ ملک میں کورونا کیسز ایک لاکھ تک جاسکتے ہیں۔ ملک میں کورونا وائرس ٹیسٹنگ صلاحیت کی کمی ہے جب تک ہم ٹیسٹنگ صلاحیت نہیں بڑھائیں گے، اس وقت تک ہمیں کنفرم تعداد معلوم نہیں ہوسکتی۔

بد قسمتی سے کوروناپاکستان کی جلدی جان چھوڑنے والا نہیں

گور نرپنجاب چوہدری محمدسرور نے کہا ہے کہ  کورونا وائرس کی وجہ سے پوری دنیا بدل رہی ہے، بد قسمتی سے کورونا جلدپاکستان کی جان چھوڑنے والا نہیں کیونکہ پوری دنیا میں کورونا وائرس کے مر یضوں کی تعداد میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے۔

کوروناانسانی تخلیق قرار

پاکستانی نژاد برطانوی باکسر عامر خان نے دعویٰ کیا ہے کہ کورونا وائرس انسانی تخلیق ہے جس کا تعلق فائیو جی ٹیکنالوجی سے ہے،تاہم دوسری طرف  سائنس دان ان سازشی نظریات کو پہلے ہی مسترد کرچکے ہیں۔

پنجاب میں ٹیسٹوں کی رفتار بڑھانے کا فیصلہ

وزیر اعلی پنجاب سردار عثمان بزدار نے برڈووڈ روڈپر محکمہ پرائمری اینڈ سیکنڈری ہیلتھ کیئر کے زیر اہتمام سنٹرل پی سی آر لیب کا دورہ کیا، اس دوران انہیں بتایاگیاکہ استعداد کار بڑھنے کے بعد سنٹرل پی سی آرلیب میں روزانہ 2000 ٹیسٹ ہوں گے جبکہ وزیراعلیٰ کاکہناتھاکہ پنجاب میں روزانہ مجموعی طور پر 3100سے زائد کورونا ٹیسٹ کئے جا رہے ہیں ۔

مزید : اہم خبریں /قومی /کورونا وائرس



جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے