پی ایس ایل میچز پر جوئے کے معاملے کی اصل حقیقت کیا ہے اور اس وقت کیا معاملات چل رہے ہیں؟ چیئرمین پی سی بی نے بالآخر سب بتا دیا

پی ایس ایل میچز پر جوئے کے معاملے کی اصل حقیقت کیا ہے اور اس وقت کیا معاملات چل رہے ہیں؟ چیئرمین پی سی بی نے بالآخر سب بتا دیا


پی ایس ایل میچز پر جوئے کے معاملے کی اصل حقیقت کیا ہے اور اس وقت کیا معاملات …

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کے چیئرمین احسان مانی نے کہا ہے کہ پی ایس ایل کے لائیو سٹریمنگ رائٹس سنگاپور کی ایک آف شور کمپنی کے پاس ہیں جنہوں نے ایک جوئے کی کمپنی کو سب لائسنس کر دیا لیکن جسے ہی ہمیں پتہ چلا ہم نے انہیں نوٹس بھیجا کہ وہ ایسا نہیں کر سکتے۔

تفصیلات کے مطابق چیئرمین احسان مانی نے اس حوالے سے اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ پی ایس ایل کے لائیو سٹریمنگ رائٹس سنگاپور کی ایک آف شور کمپنی کے پاس ہیں جنہوں نے نے اسے ایک جوئے کی کمپنی کو سب لائسنس کر دیا اور جیسے ہی ہمیں پتا چلا ہم نے انہیں نوٹس بھیجا کہ وہ ایسا نہیں کر سکتے، پھر 2،3 روز بعد ایک اور نوٹس ارسال کیاکہ اگر یہ سلسلہ جاری رکھا تو ہم آپ کے خلاف قانونی کارروائی کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ اسی طرح ہم نے اپنے رائٹس ہولڈر کے ساتھ بڑا سخت موقف اپنایا کہ بیٹنگ کمپنی سے معاہدہ نہیں کر سکتے تھے، یہ ہماری اجازت کے بغیر ہوا اور اس پر ان سے ہماری ابھی تک بات چیت چل رہی ہے، ہمیں پاکستانی ساکھ کی فکر ہے، صرف کرکٹ نہیں بلکہ یہ ملک کی بات ہے، پاکستان میں بیٹنگ غیرقانونی اور اس پر پابندی ہے، ہمارے تمام معاہدوں میں یہ لکھا جاتا ہے کہ آپ جوئے کیلئے میچ فوٹیجز استعمال نہیں کر سکتے، ہماری زیرمعاہدہ کمپنی کو ہمیں اس حوالے سے بتانا چاہیے تھا جو انہوں نے نہیں کیا اورکنٹریکٹ کی خلاف ورزی کی، جیسے ہی ہمیں پتہ چلا ہم نے اسے رکوا دیا۔

جب ان سے یہ سوال کیا گیا کہ کیا پی سی بی کو ایونٹ کے درمیان میں ہی یہ علم ہو گیا تھا اور ایونٹ کے درمیان ہی میں نوٹس بھی بھیج دیا گیا تھا تو انہوں نے کہا کہ میں یہ نہیں کہوں گا کہ ایونٹ کے درمیان میں ایسا ہوا مگر جیسے ہی ہمیں پتہ چلا ہم نے فوراً انہیں نوٹس ارسال کر دیا، پھر ایک اور سخت نوٹس بھیج کر یقینی بنایاکہ سٹریمنگ رک جائے اور انہیں دوبارہ ایسا کرنے کا خیال نہ آئے، ہم جتنی جلدی ردعمل دے سکتے تھے وہ دیا۔

چیئرمین پی سی بی نے کہا کہ ہمارا اپنے رائٹس ہولڈرز کے ساتھ اس حوالے سے رابطہ ہے، وہ تسلیم کرتے ہیں کہ انہیں ایسا نہیں کرنے چاہیے تھا، وہ معافی مانگنے کیلئے بھی تیار ہیں، مگر ہم یہ دیکھ رہے ہیں کہ اس سے پاکستان کرکٹ کو اور کیا نقصان ہو سکتا ہے، ہم نے اپنی پوزیشن محفوظ رکھی ہوئی ہے۔

مزید : کھیل /PSL /PSL News Update



جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے