چمگادڑوں پر تحقیق، سائنسدانوں کو کورونا وائرس کی 6 نئی اقسام مل گئیں

چمگادڑوں پر تحقیق، سائنسدانوں کو کورونا وائرس کی 6 نئی اقسام مل گئیں


چمگادڑوں پر تحقیق، سائنسدانوں کو کورونا وائرس کی 6 نئی اقسام مل گئیں

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک سائنسدانوں کو چمگادڑوں پر تحقیق کے دوران کوروناوائرس کی 6نئی اقسام مل گئی ہیں۔ قبل ازیں بھی کورونا وائرس کی متعدد اقسام دریافت ہو چکی ہیں تاہم یہ نئی 6اقسام اسی ’سارس کورونا وائرس 2‘ سے ملتی جلتی ہے جو اس وقت وباءکی صورت پوری دنیا میں پھیلا ہوا ہے۔ یہ نئی 6اقسام چمگادڑوں کی تین مختلف قسم کی نسلوں میں پائی جاتی ہیں۔ چمگادڑوں کی یہ تین قسمیں میانمار میں پائی جاتی ہیں۔

یہ تحقیق سمتھ سونینز گلوبل ہیلتھ پروگرام کے تحت کی گئی ہے۔ تحقیقاتی ٹیم کا کہنا ہے کہ ”کورونا وائرس کی یہ نئی اقسام جانوروں سے دیگر جانوروں اور انسانوں میں منتقل ہو سکتی ہیں یا نہیں، یہ جاننے کے لیے مزید تحقیق اشد ضروری ہے تاکہ معلوم کیا جا سکے کہ انسانی صحت کو ان سے کوئی خطرہ تو نہیں۔“ واضح رہے کہ اب تک دنیا بھر میں کورونا وائرس کے 19لاکھ سے زائد مریض سامنے آ چکے ہیں اور اس سے 1لاکھ 19ہزار اموات ہو چکی ہیں۔ اس وباءسے اب تک سب سے زیادہ متاثر ہونے والا ملک امریکہ ہے جہاں مریضوں کی تعداد 5لاکھ 88ہزار سے تجاوز کر چکی ہے اور 23ہزار اموات ہو چکی ہیں۔

مزید : تعلیم و صحت /کورونا وائرس



جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے