"ڈاکٹر ظفر مرزا خود ایڈوائزر، آگے اپنے لیے 7 ایڈوائزر”

"ڈاکٹر ظفر مرزا خود ایڈوائزر، آگے اپنے لیے 7 ایڈوائزر"


"ڈاکٹر ظفر مرزا خود ایڈوائزر، آگے اپنے لیے 7 ایڈوائزر” معاون خصوصی صحت پر …

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) تجزیہ کار ارشاد بھٹی نے  الزام عائد کیا ہے کہ معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر ظفر مرزا نے اسلام آباد کے ہسپتالوں میں جونیئر لوگوں کو عارضی چارج دے کر ہسپتالوں کا سربراہ بنایا ہوا ہے۔

ارشاد بھٹی نے "ڈاکٹرظفرمرزاکی سن لیں” کے عنوان سے ٹویٹ کیے جس میں انہوں نے معاون خصوصی برائے صحت کے حوالے سے اہم انکشافات کیے۔ ارشاد بھٹی کے مطابق  ڈاکٹر ظفر مرزا خود ایڈوائزر ہیں اور انہوں نے آگے اپنے 7 ایڈوائزر رکھے ہوئے ہیں،  انہوں نے گریڈ 18 کے ایک میڈیکل افسر صفی ملک کو ڈی جی ہیلتھ پاکستان لگارکھا ہے جبکہ  وائس چانسلر پبلک ہیلتھ سروسز یونیورسٹی ڈاکٹر اسد حفیظ کو لگا رکھا ہے۔ ڈاکٹر اسد حفیظ ایفیڈرین کیس میں 6 ماہ سزا کاٹ کرضمانت پر باہر ہیں ۔ انہیں اس عہدے پر اس لیے لگایا گیا ہے کیونکہ ڈاکٹر اسد اور ڈاکٹر مرزا ایک پرائیویٹ این جی او کے ساتھی ہیں۔

ایک اور ٹویٹ میں ارشاد بھٹی نے بتایا کہ ڈاکٹر ظفر مرزا نے  پمزہسپتال کاسربراہ ایک ڈینٹل ڈاکٹرکولگایا ہوا ہے جبکہ  پولی کلینک ہسپتال کی سربراہ ایک گائنی ڈاکٹرکوبنارکھا ہے۔  فیڈرل جنرل ہسپتال کاسربراہ ایک میڈیکل افسرکولگایا ہوا ہے۔مزےکی بات یہ ہے کہ اسلام آباد میں ہسپتالوں کےیہ سب سربراہ جونئیر ہیں اور سب کے پاس ہی عارضی چارج ہے کسی کے پاس بھی مستقل چارج نہیں ہے۔

مزید : علاقائی /اسلام آباد



جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے