کروناوائرس کی ’جائے پیدائش ‘سے اب تک کی سب سے اچھی خبرآگئی

کروناوائرس کی ’جائے پیدائش ‘سے اب تک کی سب سے اچھی خبرآگئی


کروناوائرس کی ’جائے پیدائش ‘سے اب تک کی سب سے اچھی خبرآگئی

بیجنگ(ڈیلی پاکستان آن لائن)کرونا وائرس کی جائے پیدائش چین کے صوبہ ہوبئی سے دسمبر دوہزار انیس کے بعد پہلی بار بہت اچھی خبر سامنے آئی ہے اور وہ خبر یہ ہے کہ کرونا وائرس سے متاثرہ اس صوبے میں نئے کیسز کی تعداد دس سے بھی کم رہ گئی ہے۔برطانوی خبررساں ادارے رائٹرز کے مطابق ہوبئی میں گزشتہ روز صرف آٹھ کیسز سامنے آئے ہیں جو دنیا بھرمیں خوف پھیلانے والے صوبے میں سامنے آنے والے اب تک کے سب سے کم ترین کیسز ہیں۔

کیسز میں بڑے پیمانے پر کمی کے بعد انتظامیہ نے صوبے پر لگائی گئی حکومتی پابندیاں اور سختیاں کم کرنا شروع کردی ہیں۔صوبائی انتظامیہ نے نہ صرف سفری پابندیوں میں نرمی کردی ہے بلکہ صوبے کے دو شہروں اور قصبوں میں موجود صنعتوں کواپنی پیداوار دوبارہ شروع کرنے کی بھی اجازت دے دی ہے۔صوبہ ہوبئی کی معیشت کا دارومدار مینوفیکچرنگ، ٹریڈ اور آٹو سیکٹرپرہے جو کروناوائرس کی وبا پھیلنے کے بعد تباہ ہوکر رہ گئی تھی۔

اگرچہ دنیا بھر میں یہ وائرس خوفناک حد تک تیز رفتاری سے پھیل رہا ہے تاہم چین میں صورتحال اس کے برعکس ہے اور گزشتہ سات دنوں میں نئے کیسز کی تعداد میں نمایاں کمی آگئی ہے۔چین نے کرونا وائرس پر قابو پانے کیلئے انتہائی سخت اور بروقت اقدامات اٹھائے تھے جنہیں عالمی ادارہ صحت سمیت اقوام عالم نے سراہاتھا۔چینی اقدامات میں سواکروڑ آبادی والے پورے شہر کو قرنطینہ میں بھیجنے ،صوبے کے روابط پورے ملک سے توڑنے اور سفری پابندیاں شامل ہیں۔

مزید : بین الاقوامی /تعلیم و صحت



جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے