کورونا وائرس: ڈیزل کی قیمت میں نمایاں کمی مگر اشیائے خوردونوش میں کتنا ہوا اضافہ؟ بری خبر آگئی

اشیائے خوردونوش


درآمدی ٹیکس میں کمی اور ڈیزل کی قیمت میں نمایاں کمی کے باجود اشیائے ضروریہ مہنگی کر دی گئی ہیں۔

ریٹیل سطح پر ڈیمانڈ برقرار ہے تاہم کورونا وائرس کی وبا کے باعث لاک ڈاؤن میں سپلائی نہ ہونے کے برابر ہے، جب کہ درآمدی ٹیکس میں کمی کی جا چکی ہے اور ڈیزل کی قیمت میں بھی نمایاں کمی ہو چکی، لیکن ضرورت کی اشیا مہنگی کر دی گئیں۔

لاک ڈاؤن کے دوران کراچی میں دالوں کی قیمت میں 50 روپے تک کا اضافہ کیا جا چکا ہے، مسور کی دال کی قیمت 50 روپے اضافے کے بعد 180 روپے فی کلو ہو گئی، مہنگی ہونے کے بعد مسور کی دال نایاب ہو گئی، مارکیٹ میں دستیاب نہیں۔

دال ماش کی قیمت 35 روپے اضافے سے 250 روپے فی کلو ہو گئی ہے، دال مونگ 30 روپے اضافے سے 290 روپے فی کلو کر دی گئی، دال چنا 35 روپے اضافے کے ساتھ 175 روپے فی کلو کر دی گئی۔

بیسن 30 روپے اضافے سے 200 روپے فی کلو ہو گیا، ریٹیل میں چینی 85 روپے فی کلو میں دستیاب ہے، جب کہ ہول سیل میں چینی کی قیمت 78 روپے فی کلو ہے، ریٹیل سطح پر آدھا کلو چائے کی قیمت 480 روپے فی کلو ہو گئی، گھی اور تیل کی قیمتوں میں بھی سپلائی میں تعطل کے باعث تیزی کا رجحان ہے۔



install suchtv android app on google app store

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے