کورونا وائرس کے اثرات اور موٹاپے میں گہرا تعلق سامنے آگیا، موٹے افراد کے لیے انتہائی خطرناک خبر

کورونا وائرس کے اثرات اور موٹاپے میں گہرا تعلق سامنے آگیا، موٹے افراد کے لیے انتہائی خطرناک خبر


کورونا وائرس کے اثرات اور موٹاپے میں گہرا تعلق سامنے آگیا، موٹے افراد کے لیے …

کورونا وائرس کے اثرات اور موٹاپے میں گہرا تعلق سامنے آگیا، موٹے افراد کے لیے انتہائی خطرناک خبر

  

پیرس(مانیٹرنگ ڈیسک) فرانس کے معروف وبائی امراض کے سائنسدان پروفیسر ڈاکٹر جین فرینکوئس نے کوروناوائرس کے حوالے سے موٹاپے کو سب سے بڑا خطرہ قرار دیتے ہوئے امریکہ کے لیے انتہائی تشویش کا اظہار کر دیا ہے۔ میل آن لائن کے مطابق پروفیسر جین فرینکوئس کا کہنا ہے کہ ”کورونا وائرس لاحق ہونے اور اس سے موت واقع ہونے کے حوالے سے موٹاپا ایک بڑا رسک فیکٹر ہے۔ جو شخص موٹاپے کا شکار ہو اس کو کورونا وائرس لاحق ہونے کا امکان بھی زیادہ ہوتا ہے اور اس سے اس کی موت ہونے کا خطرہ بھی زیادہ ہوتا ہے، چنانچہ مجھے امریکہ کے متعلق شدید پریشانی لاحق ہے کیونکہ امریکہ کی 42.4فیصد آبادی موٹاپے کا شکار ہے، چنانچہ وہاں کورونا وائرس سے بڑی تباہی کا خدشہ ہے۔ اس کے برعکس فرانس میں موٹاپے، عمر کے فیکٹر اور دیگر عوامل کی وجہ سے 25فیصد لوگوں کو کورونا وائرس سے زیادہ خطرہ ہے۔“

رپورٹ کے مطابق کورونا وائرس کی وباءپھوٹنے کے بعد سے سائنسدان کئی تحقیقات میں بتا چکے ہیں کہ موٹاپا، شوگر، ہائی بلڈ پریشر اور دیگر ایسی بیماریاں کورونا وائرس میں مبتلا ہونے اور اس سے موت ہونے کے خطرات کو بڑھا دیتی ہیں۔ موٹاپے کے شکار افراد کے متعلق ان تحقیقات میں بتایا جا چکا ہے کہ نہ صرف ایسے افراد کو زیادہ کورونا وائرس لاحق ہوتا ہے اور ان کی موت ہونے کا امکان زیادہ ہوتا ہے بلکہ ان میں کورونا وائرس زیادہ عرصے تک متعدی (پھیلنے والا) رہتا ہے، چنانچہ ایسے افراد دوسرے لوگوں کو زیادہ وائرس میں مبتلا کرتے ہیں۔ واضح رہے کہ اب تک امریکہ میں کورونا وائرس کے 4لاکھ 22ہزار مصدقہ کیسز سامنے آ چکے ہیں اور 14ہزار سے زائد اموات ہو چکی ہیں۔

مزید : تعلیم و صحت /کورونا وائرس



جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے