کورونا وائرس کے علاج کے لیے سائنسدانوں نے ویاگرا والا فارمولا اپنانے کا فیصلہ کرلیا

کورونا وائرس کے علاج کے لیے سائنسدانوں نے ویاگرا والا فارمولا اپنانے کا فیصلہ کرلیا


کورونا وائرس کے علاج کے لیے سائنسدانوں نے ویاگرا والا فارمولا اپنانے کا …

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) امریکہ اور یورپ کے سائنسدانوں نے کورونا وائرس کے علاج کے لیے جنسی قوت کی گولی ویاگرا والا فارمولا ٹیسٹ کرنا شروع کر دیا۔ میل آن لائن کے مطابق نائٹروجن آکسائیڈ وہ گیس ہے جس نے ہمیں ویاگرا دی، جس کا بنیادی کام خون کی وریدوں کو کھولنا اور خون کے بہاﺅ کو بہتر کرنا ہے جس کے نتیجے میں مردوں میں عضو مخصوصہ کی ایستادگی بہتر ہو جاتی ہے۔ سائنسدان اس گیس پر ٹیسٹ کر رہے ہیں کہ آیا اس کے ذریعے کورونا وائرس سے متاثرہ پھیپھڑوں کو خون کی فراہمی بہتر ہو سکتی ہے یا نہیں۔

رپورٹ کے مطابق سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ ”کورونا وائرس کے مریضوں کے پھیپھڑوں کو خون اور آکسیجن کی فراہمی کم ہو جاتی ہے جس کے بعد انہیں وینٹی لیٹر پر رکھنا پڑتا ہے۔ اگر نائٹروجن آکسائیڈ کے ذریعے ان کے پھیپھڑوں کو خون کی مناسب فراہمی ممکن ہو گئی تو انہیں وینٹی لیٹر کی ضرورت نہیں پڑے گی۔ “ فی الوقت تین امریکی ریاستوں اور تین یورپی ممالک میں اس گیس کے تجربات کیے جا رہے ہیں۔ ماہرین ہسپتالوں میں موجود کورونا وائرس کے تشویشناک مریضوں کو سی پی اے پی مشین کے ذریعے سانس کے راستے یہ گیس دے رہے ہیں۔ مریضوں کو دو ہفتے کے لیے روزانہ 20سے 30منٹ تک یہ گیس دی جائے گی اور پھر اس کے نتائج اخذ کیے جائیں گے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس



جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے