کیا پاﺅں پر ایسے نشانات نمودار ہونا بھی کورونا وائرس کی علامات ہیں؟ ڈاکٹروں نے تشویش کا اظہار کردیا

کیا پاﺅں پر ایسے نشانات نمودار ہونا بھی کورونا وائرس کی علامات ہیں؟ ڈاکٹروں نے تشویش کا اظہار کردیا


کیا پاﺅں پر ایسے نشانات نمودار ہونا بھی کورونا وائرس کی علامات ہیں؟ ڈاکٹروں …

کیا پاﺅں پر ایسے نشانات نمودار ہونا بھی کورونا وائرس کی علامات ہیں؟ ڈاکٹروں نے تشویش کا اظہار کردیا

  

پیرس(مانیٹرنگ ڈیسک) یورپی سائنسدانوں نے کورونا وائرس کی ایک نئی ممکنہ علامت دنیا کو بتا دی ہے۔ میل آن لائن کے مطابق یہ علامت پیروں کے اوپر اور تلوﺅں پر سرخی مائل دھبے بن جانا ہے۔ سپین، اٹلی اور فرانس میں کئی ایسے لوگوں میں کورونا وائرس کی تصدیق ہوئی ہے جن کے پیروں پر یہ نشانات موجود تھے۔ ان کے پیروں پر چند دنوں میں ہی یہ نشانات بنے اور پھر ان میں کورونا وائرس کی تصدیق ہو گئی جس پر سائنسدان اس خدشے کا اظہار کر رہے ہیں کہ ممکنہ طور پر یہ بھی کورونا وائرس کی ابتدائی علامتوں میں سے ایک ہے۔

رپورٹ کے مطابق ان یورپی ممالک میں یہ پراسرار نشانات زیادہ تر بچوں اور نوجوان مریضوں میں دیکھے گئے۔ اس کے علاوہ سائنسدانوں نے بتایا ہے کہ سر درد اور دھندلاہٹ سی محسوس ہوتا بھی کورونا وائرس کی علامات ہیں۔ایسے کئی لوگوں میں بھی وائرس کی تصدیق ہوئی ہے جن میں دیگر کوئی علامت نہیں تھی، ان میں صرف سردرد تھا یا انہیں چکر آ رہے تھے اور ذہنی اعتبار سے دھندلاہٹ سی محسوس ہو رہی تھی۔پیروں پر نشانات کا حامل پہلا مریض 13سالہ لڑکا تھا۔ اس کے والدین نے ابتدائی طور پر سمجھا کہ اسے مکڑی نے کاٹ لیا ہے لیکن بعد ازاں اس میں کورونا وائرس کی تصدیق ہو گئی۔ اب ماہرین متنبہ کر رہے ہیں کہ اگر کسی کے پیروں یا جسم کے دیگر کسی حصے پر بھی یہ نشانات بنیں تو انہیں کورونا وائرس کا ٹیسٹ کروانا چاہیے۔

مزید : تعلیم و صحت /کورونا وائرس



جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے