کیا کورونا وائرس ووہان کی لیبارٹری سے لیک ہوا؟ برطانوی سیاستدانوں نے نیا پینڈورا باکس کھول دیا

کیا کورونا وائرس ووہان کی لیبارٹری سے لیک ہوا؟ برطانوی سیاستدانوں نے نیا پینڈورا باکس کھول دیا


کیا کورونا وائرس ووہان کی لیبارٹری سے لیک ہوا؟ برطانوی سیاستدانوں نے نیا …

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک)کورونا وائرس کہاں پیدا ہوا اور کیسے پھیلا؟ اس حوالے سے ایک الزام امریکہ نے چین پر عائد کیا تھا اور اب برطانوی حکام بھی چین کو شک کی نگاہ سے دیکھ رہے ہیں۔ میل آن لائن کے مطابق وزیراعظم بورس جانسن کی قیادت میں کام کرنے والی ایمرجنسی کمیٹی ’کوبرا‘ کے اراکین کا کہنا ہے کہ اس امکان کو نظرانداز نہیں کیا جا سکتا کہ کورونا وائرس چین کے شہر ووہان کی لیبارٹری ’انسٹیٹیوٹ آف ویرالوجی‘ میں سائنسدانوں نے تیار کیا اور وہاں سے یہ عام لوگوں میں پھیلا۔ کوبرا کے ایک رکن نے میل آن لائن سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ چین سے مقامی رپورٹس ایسی آ رہی ہیں جن سے اس الزام کو تقویت مل رہی ہے۔ ان رپورٹس میں بتایا جا رہا ہے کہ یہ وائرس اس لیبارٹری میں کام کرنے والے کچھ لوگوں پر خون کا سپرے کیے جانے کے بعد انہیں لاحق ہوا اورجب وہ لیبارٹری سے باہر آئے تو وائرس ان سے دیگر لوگوں کو منتقل ہوا اور پھیل گیا۔

کوبرا کے اس رکن کا کہنا تھا کہ ”اگرچہ سائنسدان تحقیقات میں بتا چکے ہیں کہ کورونا وائرس لیبارٹری میں تیار نہیں ہوا بلکہ ووہان کی گوشت مارکیٹ میں فروخت ہونے والی کسی چمگادڑ سے انسانوں میں منتقل ہوا، لیکن سائنسدانوں کے اس دعوے کے برعکس کئی ایسے شواہد ہیں جو اشارہ کرتے ہیں کہ ممکنہ طور پر یہ وائرس انسٹیٹیوٹ آف ویرالوجی سے پھیلا جو ووہان کی گوشت مارکیٹ سے صرف10میل کے فاصلے پر ہے۔ یہی وہ لیبارٹری تھی جس نے سب سے پہلے بتایا تھا کہ کورونا وائرس چمگادڑ میں پائے جانے والے وائرس سے 96فیصد مشابہہ ہے۔ 2018ءمیں چینی اخبار پیپلزڈیلی اپنی ایک رپورٹ میں بتا چکا ہے کہ اس لیبارٹری میں ایبولا جیسے کورونا وائرس پر تجربات کیے جا رہے ہیں۔اس کے علاوہ کئی ایسے اشارے ہیں جن کی وجہ سے کورونا وائرس کے پھیلاﺅ میں اس لیبارٹری کے ملوث ہونے کے امکان کو یکسر رد نہیں کیا جا سکتا۔“

واضح رہے کہ کورونا وائرس پھیلنے کے بعد امریکہ کی طرف سے الزام عائد کیا گیا تھا کہ یہ وائرس چین کے شہر ووہان میں موجود لیبارٹری ’انسٹیٹیوٹ آف ویرالوجی‘ میں تیار کیا گیا اور وہاں سے لیک ہو کر عام لوگوں میں منتقل ہوا۔ اس کے جواب میں چین کی طرف سے الزام عائد کیا گیا کہ کورونا وائرس امریکہ نے لیبارٹری میں تیار کیا اور جنگی مشقوں کے لیے چین آنے والے امریکی فوجیوں نے ووہان میں پھیلایا۔ سائنسدان تحقیقات میں ان دونوں الزامات کو مسترد کر چکے ہیں اور بتا چکے ہیں کہ وائرس لیبارٹری میں تیار ہی نہیں ہوا، بلکہ چمگادڑ سے انسانوں میں منتقل ہوا۔

مزید : بین الاقوامی



جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے