’ہو سکتا ہے ہوا کے اخراج کے ذریعے بھی کورونا وائرس لوگوں کو منتقل ہورہا ہو‘ معروف ڈاکٹروں نے اب تک کا سب سے انوکھا دعویٰ کردیا

’ہو سکتا ہے ہوا کے اخراج کے ذریعے بھی کورونا وائرس لوگوں کو منتقل ہورہا ہو‘ معروف ڈاکٹروں نے اب تک کا سب سے انوکھا دعویٰ کردیا


’ہو سکتا ہے ہوا کے اخراج کے ذریعے بھی کورونا وائرس لوگوں کو منتقل ہورہا ہو‘ …

’ہو سکتا ہے ہوا کے اخراج کے ذریعے بھی کورونا وائرس لوگوں کو منتقل ہورہا ہو‘ معروف ڈاکٹروں نے اب تک کا سب سے انوکھا دعویٰ کردیا

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) سائنسدان اب تک کورونا وائرس پھیلنے کے کئی طریقے بتا چکے ہیں اور اب ڈاکٹروں نے اس کے پھیلاﺅ کا اب تک کا سب سے انوکھا ممکنہ طریقہ بتا دیا ہے۔ ڈیلی سٹار کے مطابق سی بی بی سی سیریز آپریشن اوچ کے میزبان ڈاکٹر زینڈر وین ٹولکین سمیت کئی معروف ڈاکٹروں نے دعویٰ کیا ہے کہ کورونا وائر س ممکنہ طور پر لوگوں کے جسم سے خارج ہونے والی ہوا کے ذریعے بھی پھیل رہا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ کئی تحقیقات میں سائنسدان بتا چکے ہیں کہ 55فیصد مریضوں کے پاخانے میں بھی کورونا وائرس پایا گیا۔ اس سے یہ ظاہر ہوتا ہے کہ وائرس جسم سے خارج ہونے والی ہوا کے ذریعے بھی پھیل سکتا ہے۔

کیرل کروسزیلنکی نامی ایک آسٹریلوی ڈاکٹر نے اس حوالے سے ایک اور دلیل دی کہ ایک تحقیق میں قبل ازیں یہ بھی ثابت ہو چکا ہے کہ جسم سے خارج ہونے والی ہوا ٹیلکم پاﺅڈر کو طویل فاصلے تک پھیلا سکتی ہے۔ چنانچہ اس کے ذریعے وائرس بھی اتنے ہی فاصلے تک پھیل سکتا ہے اور سانس کے ذریعے دوسرے لوگوں میں منتقل ہو سکتا ہے۔ ان ڈاکٹروں نے لوگوں کو مشورہ دیا ہے کہ انہیں ایسی پینٹس پہننی چاہئیں جو ان کے جسم سے خارج ہونے والی ہوا کو پھیلنے سے روک سکیں۔

مزید : تعلیم و صحت /کورونا وائرس



جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے